سن ڈو کو (Tsundoku) — وحیدالرحمن خاں کی نظم

0
میری لائبریری میں
ہر رنگ کی کتابیں ہیں ،
ان میں سے کچھ بہت وزنی ہیں ،
نازک اندام بھی ہیں ،
مہنگی بھی ہیں ،
کم دام بھی ہیں ،
قصہ پارینہ بھی ہیں ،
اشاعت تازہ بھی ہیں ،
پرانی کتابوں سے
اجداد کے پسینے کی
اور نئی کتابوں سے
کرارے نوٹوں کی
خوش بو آتی ہے ،
ان میں سے اکثر میں نے
اردو بازار سے خریدی ہیں ،
بہت سی ایسی ہیں
جو فٹ پاتھ سے
سستی مل گئی تھیں ،
بہت عرصے سے
انہیں پڑھنے کی حسرت ہے
مگر فرصت ہے نہ عادت ہے ،
کئی ناول میں نے
الگ باندھ کے رکھے ہیں ،
ملازمت سے سبک دوش ہو کر
فراغت کے زمانے میں
مزے لے لے کر پڑھوں گا ،
ان میں عینی کا ناول بھی شامل ہے :
کار جہاں دراز ہے !
میں نے لائبریری میں
وہ ان پڑھی کتابیں بھی
سلیقے سے
الماری میں سجائی ہیں
جن کی فہرست
سال نو کے موقعے پر
رات بارہ بجے بنائی تھی ،
میں جب بھی
لائبریری سے گزرتا ہوں،
میری جانب دیکھ کر
کتابیں مسکراتی ہیں ،
ان کی آنکھوں میں شکوہ،
لبوں پر شاہی تبسم ہوتا ہے ،
میں نظر چرا کر،
سر جھکا کر ،
وہاں سے گزرتا ہوں ،
ندامت کا یہی احساس
میرا سرمایہء انکسار ہے ،
یہ میرے عجز کا اثاثہ ہے ،
یہ بھی ایک طرز مطالعہ ہے !
(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply