پہلے ٹی ٹونٹی میچ کی کارگزاری — سعید الرحمٰن قریشی

0

گذشتہ رات کو تاجِ برطانیہ کا گراؤنڈ ٹرینٹ برج ایک ایسے مقابلے کا گواہ بنا جو مدتوں یاد رہے گا۔

ون ڈے سیریز بری طرح ہارنے کے بعد فارمیٹ کی تبدیلی جیسے ہی ہوئی پاکستان نے شاید سوئی قسمت کا گئیر بھی بدل دیا۔

انگلینڈ کی سیکنڈ کلاس ٹیم کے خلاف تھرڈ کلاس کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی پاکستانی ٹیم نے رات کو دنیا کے بہترین سپر سٹارز پر مشتمل ٹیم کو کھیل کے ہر شعبے میں آؤٹ کلاس کر دیا۔

وہ جو زمین پر پٹخے گئے تھے وہ آج سروں پر بٹھائے گئے ہیں

ٹاس جیتا انگلینڈ نے اور دے دی بلے بازی کی دعوت پاکستان کو، رضوان اور بوبی کریز پر آئے تو شروع میں چند اوور ایج وغیرہ لگ کر سکور بننا شروع ہوئے مگر جلد ہی بابر نے مومنٹم پکڑ لیا، دوسری جانب رضوان کو فارم میں واپس آنے کیلیے کسی کمزور اوور کی تلاش تھی جو لونگ سٹون کی صورت میں پوری ہوئی اور پھر ان دونوں کا بلا ایسا چلا کہ ہر انگلش باؤلر باری کے اختتام پر Shinwari Academy Of Swing & Turn  کا تاحیات ممبر بن چکا تھا۔ 😁

یادش بخیر کہ یہ وہ اکیڈمی ہے جہاں ہر اس باؤلر کے زخموں پر مرہم رکھا جاتا ہے جس کی دورانِ میچ اچھی خاصی پٹائی ہوتی ہے۔ سر عثمان محمد ڈان خان شنواری اس اکیڈمی کے روحِ رواں ہیں۔ 😂

خیر۔۔۔۔!

 پاکستانی اننگ کی اچھی بات یہ تھی کہ کسی بلے باز نے گیندیں ضائع نہ کیں، جو بھی آیا وہ آ کر دھوتا ہی چلا گیا اور جب بیس اوور مکمل ہوئے تو سکور بورڈ پر پاکستان کا سب سے بڑا ٹوٹل 232 رنز جگمگا رہا تھا۔

اب باری شروع ہوئی تاجِ برطانیہ کے نام لیواؤں کی

 مگر ٹھہریے

صبح ہوتی ہے شام ہوتی ہے، زمانہ بدلتا ہے تاریخ بدلتی ہے حتیٰ کہ ملک کیا براعظم بھی تبدیل ہو جاتا ہے مگر ہمارا آفریدی پہلے اوور میں وکٹ لینا نہیں بھولتا، ہماری پیس بیٹری کے انچارج جناب شاہین آفریدی نے اپنے پہلے ہی اوور میں اپنا کمال دکھایا، ٹی ٹونٹی فارمیٹ میں دنیا کے نمبر ون بلے باز ڈیوڈ ملان کا شاندار ریٹرن کیچ تھام کر سبھی کو ششدر کر دیا۔

وہ کہتے ہیں ناں کہ Catches, win the matches کیچ آپ کا، میچ آپ کا 

بس یہی کہانی کا خلاصہ ہے کہ اس کیچ کے بعد پھر کسی پاکستانی نے کسی بھی شعبے میں پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا، ایک مکمل بیٹنگ پچ پر چھوٹی باؤنڈریز کے ہوتے ہوئے حسنین اور آفریدی کی عمدہ گیند بازی اور پاکستان کی مجموعی طور پر شاندار، جاندار اور تگڑی فیلڈنگ کے سبب میچ ہم جیت گئے۔

#لونگ_سٹون_کا_لاٹھی چارج بھی کام نہ آیا اور سنچری کے باوجود انگلستان کو شکست کا منہ دیکھنا پڑا۔

شاہین کا عمدہ کیچ ہو یا حارث رؤف کا ناقابلِ یقین کیچ، شاداب کی اعلیٰ فیلڈنگ اور تھرو ہو یا فخر، حفیظ اور صہیب کی بلے بازی۔۔۔۔ آج کس کس کی بات کریں؟ ہر چیز ہی لاجواب، باکمال، عمدہ اور بہترین رہی۔

ایک صفر کی برتری حاصل کرنے کے بعد شاہینوں کا اگلا پڑاؤ ہیڈنگلے میں ہو گا جہاں یہ اتوار کو میدان میں اتریں گے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply