ٹرین حادثات کیوں ہوتے رہیں گے؟ — نعیم صادق

0

ہر بڑے حادثے کے بعد، میں ریلوے کے 27 سینئرترین عہدیداروں کو ای میل بھیجتا ہوں، جس میں یہ بتاتا ہوں کہ ٹرین حادثات کیوں ہوتے رہیں گے اور ان کی روک تھام کے لئے کیا ضروری ہے۔ ہمیں پاکستان ریلوے کی اس ثابت قدمی پر تعریف کرنی چاہیئے کہ کئی برسوں پر پھیلی ہوئی ان ای میلز کا ان کی جانب سے کبھی جواب نہیں ملا۔

گھوٹکی ٹرین حادثے میں 7 جون 2021 کو ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد اس سے کہیں زیادہ ہے، جو گذشتہ 20 برسوں میں برطانیہ میں ریلوے کے تمام حادثات میں ہلاک ہوئے ہیں۔ صرف پچھلے چار مہینوں میں ہی پاکستان ریلوے میں 64 حادثات ہوئے۔ جو گذشتہ 21 برسوں میں ترکی میں پیش آنے والے ریلوے حادثات کے واقعات سے 9 گنا زیادہ تھے۔ پاکستان ریلوے اس قدر ناکارہ اور غیر محفوظ کیوں ہے، اور اس کی وجوہات کیا ہیں؟ اس کا جواب بہت آسان ہے۔ یہ اب بھی ایک صدی پرانے ساز وسامان اور پٹریوں کے ساتھ چلایا جارہا ہے۔ جبکہ اس کا انتظامی نظام 18ویں صدی کے نوآبادیاتی اور بیوروکریٹک سسٹم کے ساتھ چل رہا ہے۔ افغانستان کے علاوہ، شاید پاکستان ریلوے دنیا کی واحد ریلوے ہے جس کے پاس ابتدائی پیشہ ورانہ صحت اور حفاظت سے متعلق نظم و نسق کا نظام بھی موجود نہیں ہے۔ جو عالمی سطح پر ضروری ہے، چاہے آپ 10 افراد کی کمپنی چلا رہے ہوں۔

اگر آپ پانچ یا اس سے زیادہ لوگوں کو ملازمت دیتے ہیں توبرطانیہ میں دستاویزی صحت اور حفاظت کا نظام ایک قانونی تقاضا ہے۔ یہ ایک ایسا نظام ہے جو ایک تنظیم کے اس نقطہ نظر اور عزم کا تعین کرتا ہے جو لوگوں کی صحت اور آلات کی حفاظت کے انتظام کے لئے ترتیب دیئے گئے ہوں۔ یہ ایک منفرد دستاویز ہے جو کسی تنظیم میں اس بات کی وضاحت کرتی ہے کہ کون، کیا، کب اور کیسے خطرات، اور خوف کو کنٹرول اور ختم کیا جاتا ہے۔ یا اس سے بچاؤ کا انتظام کیا جاتا ہے۔

ایک حادثے کے بعد ہمارے سیاستدان سب سے پہلے جو کام کرتے ہیں وہ ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھہرانا ہے۔ اگلا قدم وہ یہ کرتے ہیں کہ لائن مینوں، سگنل مینوں، ٹرین ڈرائیوروں، الیکٹریشن، پٹریوں، مسافروں یا پریشر ککروں پر الزام تراشی کرتے ہیں۔ کوئی بھی یہ تسلیم کرنے کو تیار نہیں ہے کہ ہمارے پاس ایک قدیم ٹاپ مینجمنٹ ہے جو ٹرینوں کا انتظام کرنے کی بجائے پتھروں کو توڑ رہی ہوتی تھی۔ موجودہ حالات میں اس ’لیڈر شپ ‘ کو برقرار رکھنا اور ریلوے حفاظتی نظام کی ترقی نہ کرنے پر اصرار کرنا، نہ ختم ہونے والے حادثات اور مسلسل جانی نقصان کی ضمانت ہے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply