Browsing: آپ بیتی، خاکہ، تذکرہ

آپ بیتی، خاکہ، تذکرہ
ڈاکٹر افتخار حیدر ملک، شعبہ تاریخ، قائداعظم یونیورسٹی سے جڑی یادیں — ملک تنویر اختر
By

ڈاکٹر صاحب کو جاننے کے لیے انکا حلیہ بیان کرنا ضروری ہے، سانولا رنگ، مانٹی نیگرن فیچرز، دراز قد ایسے کہ سرو رشک کرے، پوری طرح دیکھنے کے لیے صرف نظریں نہیں سر بھی اٹھانا پڑتا ہے، بولیں تو جیسے علم کی آبشاریں پہاڑوں سے اتر رہی ہوں، انگریزی اردو، پنجابی ان کی گفتگو میں یوں ہم آغوش ہوتی رہتی ہیں کہ جیسے علمی و لسانی کاک ٹیل سرو ہو رہا ہو، حس مزاح کی دفعتہ کوندتی بجلی کہ آپ کے الرٹ ہونے سے پہلے گفتگو کی ٹرین اگلے سٹیشن پر، مدلل بات چیت اخلاص نیت کے ورق سے مزین بس جی کرتا ہے وہ بولتے رہیں اور انسان سنتا رہے۔

آپ بیتی، خاکہ، تذکرہ
سرے گھاٹ کے بازار حسن سے گورنمنٹ ہائی اسکول تک — عطا محمد تبسم
By

ہمارے پرائمری اسکول کی ایک اور خاص بات یہ تھی کہ یہ سرے گھاٹ پر اس جگہ پر تھا، جس کے قریب ہی بازار حسن تھا۔ یہ بازار حسن لاہور کے بعد سب سے زیادہ مشہور تھا۔ ہماری کلاس میں کچھ لڑکے اس محلے سے پڑھنے آتے تھے۔ کلاس کے بڑے لڑکے انھیں اکثر چھیڑتے تھے۔ ان کا مذاق بھی اڑاتے۔ اور ان سے ایسی باتیں کرتے جو ہمارے سمجھ میں نہیں آتی تھیں، لیکن آہستہ آہستہ ہمیں پتہ چلا کہ کچھ لڑکے ہاف ٹائم میں اس محلے میں جاتے ہیں۔ ہمیں بھی شوق چرایا کہ

آپ بیتی، خاکہ، تذکرہ
زندگی سے پہلے: عامر حسین کے ساتھ آصف فرخی اور شیراز دستی کی گفتگو
By

عامر حسین کراچی میں پیدا ہوئے۔ تیرہ برس کی عمر میں جنوبی ہندستان گئے اور پھر پندرہ سال کی عمر میں لندن چلے گئے اور وہیں مستقل سکونت اختیار کر لی۔
فرانسیسی،اطالوی، ہسپانوی، فارسی، ہندی، اردو، انگریزی زبانوں میں لکھنے پڑھنے اور بول چال میں مہارت رکھتے ہیں۔ انگریزی میں ان کے اب تک دو ناول اور کہانیوں کے چھ مجموعے شائع ہو چکے ہیں۔
زندگی سے پہلےان کی اردو میں پہلی کتاب ہے۔ اس کے پیش لفظ میں آصف فرخی صاحب نے افسانوی لگنے والی اس حقیقت کی طرف اشارہ کیا ہے کہ عامر حسین صاحب سے اردو میں لکھنے کی فرمائش سب سے پہلے قراۃ العین حیدر نے کی تھی اور ان کی اردو میں پہلی اشاعت پر دعا اور مبارک باد انتظار حسین نے دی تھی۔ ایک اور حسین اتفاق یہ ہے کہ ان کا پہلا انگریزی سے اردو ترجمہ فہمیدہ ریاض نے کیا تھا اور اردو میں ان کا پہلا انٹرویو آصف فرخی نے کیا تھا۔

1 2 3 50