عورت کو چھیڑنے کا مسئلہ: زبیر جیلانی

0
  • 39
    Shares

(پہلا واقعہ)__ “کچھ دنوں پہلے سوشل میڈیا پر ایک خاتون کی پوسٹ بہت زیادہ شیئر کی گئی جس کے مطابق وہ ایک سیاحتی مقام پر گئی، جہاں موجود لڑکوں کے ایک گروپ نے ان کو “ہیریس” کرنے کی کوشش کی۔ خاتون نے لڑکوں کی تصویریں سوشل میڈیا پر اپنی “آب بیتی” کے ساتھ وائرل کر دیں”.

(دوسرا واقعہ) ___ “کچھ عرصے قبل آسٹریلیا کے ایک عالم دین نے بیان دیا تھا جس کا مفہوم کچھ اسطرح تھا کہ اگر کسی “بے پردہ” عورت کے ساتھ ریپ ہو جائے تو وہ خود اس کی ذمہ دار ہے کیونکہ اگر گوشت کو ننگا سڑک پر رکھ دیا جائے اور بلی اسے کھا جائے تو قصور گوشت رکھنے والے کا ہو گا، نہ کہ بلی کا”۔

کبھی کسی کیلے کو ننگا دکھا کر اس پر چار “کیڑے” چپکا دینا، کبھی کسی ٹافی کے شاپر کو اتار کر اس پر دو کیڑے چپکا کر، اور کبھی بلی اور گوشت کو مثال بنا کر، اس بات کی “مثال” دینا کہ جو عورت پردہ نہیں کرتی وہ اسی طرح “غیر محفوظ” ہے، ایک تھرڈ کلاس ذہنیت کی نمائندہ سوچ ہے۔

اس موضوع کو آپ بہت بہتر طریقے سے سمجھ سکتے ہیں اگر آپ ایک اصول کی بات سمجھ جائیں اوہ وہ ہے طاقت کا اصول۔ دنیا بھر میں ہمیشہ سے طاقت ور انسان یا ادارہ اپنے سے کمزور پر حاوی رہا ہے۔ غلط یا صحیح کی بحث سے قطع نظر اس وقت اس پہلو کو اجاگر کرنے کا مقصد صرف یہ ہے کہ عورت فطری طور پر مرد کے مقابلے میں کمزور ہے اور تاریخ میں مرد نے ہمیشہ سے اس بات کا فائدہ اٹھایا ہے۔ اسی پس منظر میں رسولﷺ نے اپنے خطبہ حج کے موقع پر مردوں سے ارشاد فرمایا کہ،

“عورتوں کے معاملے میں خدا سے ڈرو”

جہاں تک “ہیرسمنٹ” کا تعلق ہے تو اس حوالے سے عورتوں کو دو باتیں سمجھ لینی چاہئے، پہلی یہ کہ عورت جب بھی روزمرہ کے معاملات کے لئے گھر سے باہر اسکول، کالج، آفس، محلے کے بازار، اور پبلک ٹرانسپورٹ کے لئے نکلتی ہے تو یہ جگہیں “محفوظ مقامات” کہلاتے ہیں اس کے برعکس جب کبھی تفریحی مقامات پر جانا ہو جہاں آوارہ افراد پائے جاتے ہوں “غیر محفوظ مقامات” کہلاتے ہیں۔ عورت جب کبھی بھی غیر محفوظ مقامات پر جائے تو اس پر کچھ اضافی ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں جس میں پردے کا مناسب انتظام شامل ہے۔ یہ اسی لئے ہے کہ وہ ستائی نہ جائیں۔ اگر پھر بھی کوئی ان کو چھیڑتا ہے تو وہ مکھن کی طرح نرم ہونے کے بجائے اپنے رویہ کو سخت کرئے اور اپنے اردگرد جو بھی فیملی ہوں اس کو اس معاملے میں شامل کریں اور قانون کا سہارا لیں۔

 مردوں کو ایک بات اچھی طرح سمجھ لینی چاہئے کہ ایسے مقامات پر عورت کا بے پردہ ہونا مرد کے لئے “موقع” نہیں بلکہ “آزمائش” ہے.

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: