بہاولپور حادثہ اور ٹائی ٹینک فلم کا منظر : طاہر ملک

0

ابھی پارہ چنار کے شہیدوں کے غم و الم کے آنسو سوکھے ہی نہ تھے کہ نئے حادثہ میں ہلاک ہو نے والوں کے جنازے آن پہنچے۔ کبھی دھشت گردی کبھی کوئی سانحہ منیر نیازی کے بقول آسیب کا سایہ پاکستان سے ختم ھونے کا نام ھی نہیں لیتا۔
ابھی چند روز پہلے پنجاب میں صحت کی حالت زار اور چالیس ھسپتالوں کے لئے صرف چھہ ارب روپے کے فنڈز پر کالم لکھا تو پنجاب حکومت کے ترجمان نے ناکافی فنڈز تسلیم کرتے ھوئے یہ فنڈ بڑھا کر 20 ارب روپے کرنے کی خوشخبری سنائی تو میں نے وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا شکریہ ادا کرتے ھوئے یہ لکھا کہ پھر بھی پنجاب جیسے بڑے صوبے کے لئے یہ رقم کسی ایک شہر کے میٹرو منصوبے کے کل بجٹ سے کم ہے۔ ڈاکٹر آشر اسلام آباد کے پمز ھسپتال کے برن سنٹر میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ اکثر میری توجہ اس جانب مبذول کرواتے ہیں کہ پورے خیبر پختونخوا کشمیر سے لے کر جہلم تک یہ واحد برن سنٹر ھے جس پر مریضوں کا بے پناہ دباؤ ھے۔ صرف بائیس بیڈ کے اس برن سینٹر میں موسم سرما شروع ہوتے ہی ناقص اور غیر معیاری سیلنڈر پھٹنے کے واقعات کے نتیجے میں زخمی ہوئے والے مریضوں کا علاج کرنا ایک چیلنج بن جاتا ہے۔ میں انہیں کہتا ہوں کہ سیٹھ میڈیا کے پاس ان اھم مسائل کو اجاگر کرنے کا وقت نہیں اور ریٹنگ کی دوڑ میں ایک دوسرے پر سبقت لے جانے میں بھلا ان ایشوز کو کون پوچھتا ہے۔ پمز ھسپتال سے باہر نکلتے وقت اسلام آباد کا بہت بڑا شاپنگ مال اور اسی شاہراہِ پر اربوں روپوں کی لاگت سے بننے والی میٹرو بس سروس اور اس بے جوڑ ترقی پر ماتم کا دل کرتا ہے۔

حادثات اور سانحے دنیا کے ہر ملک میں ہوتے ھیں لیکن ان کی قیادت قوم کے شانہ بشانہ کھڑی ہوتی ہے افسوس کا مقام یہ ہے کہ ہمارے وزیر اعظم عید بھی لندن میں مناتے ہیں اور غریب لوگ مہینوں پیسے جمع کرکے اپنوں کے ساتھ عید منانے بسوں اور ٹرینوں کی چھتوں پر لٹک کر آبائی علاقوں کو جاتے ھیں۔
مجھے اپنی حکمران اشرافیہ کا رھن سہن دیکھ کر مشہور زمانہ انگریزی فلم ٹائی ٹینک یاد آتی ہے جس میں جب بحری جہاز برف کے تودے سے ٹکراتا ہے تو جہاز کے نچلے حصے میں سوراخ ہونے کے باعث پانی جہاز میں داخل ھونا شروع ہوتا ہے اوربالائی منزل پہ موجود امرا کا بے خبر طبقہ فرسٹ کلاس میں موج مستی اور عیاشیوں میں مصروف ہوتا ہے۔ اس منظر کی ہمارے حالات سے مطابقت اہل نظر سے پوشیدہ نہیں۔

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: