پاک بھارت سپر فائنل :ایک اور سردرد

0
  • 1
    Share

پاکستان اور انڈیا کی مسابقت بہت پرانی ہے. جو ٹھیک اسی وقت شروع ہوئی جب سے یہ دونوں ممالک قائم ہوئے۔۔ کرکٹ دونوں ممالک میں جنون اور لگن سے کھیلی اوردیکھی جاتی ہے اور اس میدان میں دونوں ممالک کا ٹاکرا عمومی طور پہ جنگ کے مترداف ہوتا ہے ۔۔ 1952سے شروع ہونے والی یہ جنگ ابھی تک جاری ہے. یہاں دونوں ممالک کے باہمی مقابلوں کاسرسری جائزہ لیتے ہوئے ریکارڈ پیش کررہا ہوں ۔۔۔ پاکستان اور انڈیا پہلی مرتبہ اکتوبر1952میں آمنے سامنے ہوئے اور بھارت نے پانچ میچوں کی سیریز دو- ایک کے مارجن سے جیت کر پہلی کامیابی سمیٹی ۔۔۔اب تک کی باہمی سولہ ٹیسٹ سیریز میں سے پاکستان اور بھارت چار چار سیریز جیت چکے ہیں، جن میں سے بھارت نے 9 جبکہ پاکستان نے 7کی میزبانی کی ۔۔ ٹیسٹ کےمقابلوں میں پاکستان نے مجموعی طور پہ ساٹھ مقابلوں میں سے 12جیت رکھے ہیں جبکہ بھارت کا اسکور 9 ہے ۔۔۔ ون ڈے مقابلوں میں بھی پاکستان کا پلڑا بھاری ہے۔ مجموعی 127باہمی مقابلوں میں سے پاکستان نے 72 جبکہ انڈیا نے51میچز اپنے نام کئے ہیں۔ جبکہ مجموعی 6ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں سے چار بھارت جبکہ ایک پاکستان نے جیتا ہے ۔۔۔ جبکہ 17دو طرفہ سیریز میں سے پاکستان نے گیارہ،بھارت نے پانچ جیت رکھی ہیں ، جبکہ ایک سیرز ڈرا ہوئی ۔۔ ایک سے زائد فریقین کی موجودگی میں کھیلی گئی 27سیریز (جن میں پاکستان اور بھارت بھی شریک ہوئے) میں سے پاکستان نے گیارہ جبکہ بھارت نے چار مرتبہ سیریز جیتیں۔۔ باقی دیگر سیریز میں دیگر ٹیمیں کامیاب رہیں ۔۔۔ آئی سی سی ٹورنامنٹس کی بات کی جائے تو اس ضمن میں بھارت کا پلڑا صرف بھاری نہیں،بہت بھاری ہے ۔۔ اب تک کسی بھی ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں پاکستان بھارت کو کبھی شکست نہیں دے سکا ہے. جبکہ مجموعی طور پہ بھارت نے ون ڈے ورلڈکپ دو مرتبہ جبکہ پاکستان نے ایک مرتبہ اپنے نام کیا ہے ۔۔ اسی طرح ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں دونوں ٹیمیں ایک ایک بار یہ تاج اپنے سرچڑھاچکی ہیں۔۔ (پہلے اور دوسرے ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ بالتریب انڈیا اورپاکستان نے جیتے)  آئی سی سی ٹورنامنٹس میں بھارت دو ون ڈے ورلڈ کپ، ایک ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ جبکہ دو مرتبہ چیمپئنزٹرافی اپنے نام کرچکا ہے ۔۔ پاکستان ایک ون ڈے اور ایک ٹی ٹوئنٹی ہی اپنے نام کرپایا ہے ۔۔ بھارت نے اب تک 3انڈر نائنٹی ،پانچ ایشیا کپ ،ایک ایسٹرل ایشیا کپ ، اور پانچ مرتبہ خواتین ایشیا کپ جیتا ہے ۔۔ اس کےبرعکس پاکستان نے دو مرتبہ انڈرنائنٹی عالمی کپ، ایک مرتبہ ایشین ٹیسٹ چیمپئن شپ،دو مرتبہ ایشیا کپ،تین مرتبہ ایسٹرل ایشیا کپ (یہی وہ کپ ہے ، جس کےپہلے ایڈیشن میں پاکستان نے میانداد کےتاریخی چھکے کی بدولت پہلی مرتبہ کوئی ون ڈے ٹورنامنٹ جیتا تھا) جیت رکھے ہیں . بدقسمتی کی انتہا کہ پاکستان نے تاحال کوئی خواتین ایشیاکپ نہیں جیت رکھا۔ آئی سی سی ورلڈکپوں میں آج تک پاکستان اور بھارت صرف ایک مرتبہ ایک ہی کپ میں دو دفعہ آمنےسامنے آئے اور اتفاق دیکھئے دونوں مرتبہ ایک ہی شخص ہارتے ہوئے میچ کو جیت کےقریب لایا ،مگر بدقسمتی سے آخری موقع پہ میچ کواچھے طریقے سے فنش نہ کرسکا۔۔۔ اب تاریخ نے دوسری مرتبہ یہ موقع فراہم کردیاہے کہ کسی آئی سی سی ٹورنامنٹ میں پاکستان اور بھارت پول میچ کے بعد دوبارہ آمنے سامنے ہیں. اس مرتبہ بھی پاکستانی ٹیم کا آغاز2007کے ورلڈکپ جیسا ہی ہے جب ہم مسلسل شکستوں کےبعد ایک چانس پہ آگے پہنچے اور پھر ناقابل یقین اندازمیں فائنل تک رسائی حاصل کی ۔۔۔ اس مرتبہ بھی کمزور بیٹنگ، باؤلنگ اور بدترین شکست کے بعد اچانک ہی ٹیم نے ایسا پلٹاکھایا کہ ٹاپ رینک کی ٹیموں کو بدترین شکستوں سے دوچار کرتے ہوئے فائنل میں جگہ بنائی ہے ۔۔ لیکن اب ایک مرتبہ پھر اس کا سامنا اپنےخوف یعنی روایتی حریف بھارت سے ہے ۔۔۔ دیکھنا یہ ہے کہ کیا اس مرتبہ ٹیم ہوش کےساتھ میچ کھیل کر تاریخ بدلتی ہے یا پھر جوش کے ہاتھوں مجبور ہوکر اپنے پر کتروا کے گھرواپس آتی ہے ۔۔۔ویسے سناتو یہی ہے کہ تاریخ اپنے اپ کو دہراتی ہے ۔۔

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: