عورتیں پاگل کیوں ہو جاتی ہیں ؟؟ صدف زبیری

1

فرخندہ کم عمری میں جوائنٹ فیملی میں ایک مذہبی گھرانے کی بڑی بہو بن کر آئ تین دیور اور پانچ نندیں تھیں ۔گھر مسجد سے متصل ہونے کی وجہ سے مسجد کے آداب کا پورا خیال رکھا جاتا ٹی وی نہیں ، ریڈیو نہیں کم بولو ، دھیرے ہنسو ، چھوٹے دیور نندیں کیا سوچیں گے ، شوہر سادہ سنجیدہ طبیعت ، ادھر فرخندہ کی شوخی الامان ۔۔۔ ہر وقت مہندی سے ہاتھ رنگے جارہے ہیں چوڑیاں بھری جا رہی ہیں ٹھٹھے لگ رہے ہیں ، گنگنایا جارہا ہے مجبوراً قابو کرنے کے لئے شوہر ہاتھ نہ اٹھاتا تو کیا کرتا …. سو مار کٹائ وہ بھی سب کے سامنے…..مگریہ بھی فرخندہ کو قابو نہ کر سکی ۔۔جیسے تیسے سال گزرے، پندرہ برس لگے نند دیوروں کو بیاہنے اور فرخندہ کو الگ گھر نصیب ہونے میں ۔۔۔۔مگر اب بیٹی جوان ہو رہی تھی ادھر محترمہ کی شوخیاں کم نہیں ہوتی تھیں ایک دو بار کسی نے سمجھانے کی کوشش کی تو آنکھوں میں آنسو بھر کر بولیں ۔۔۔اتنی گھٹن ہوتی ہے اور کیا کروں ؟؟؟خیر جناب چند سال میں بیٹی بیاہی گئی ۔۔پہلے ننددیور ، پھر جوان ہوتی بیٹیاں ، پھر داماد ۔۔۔اب فرخندہ کی شوخیوں کے لئے کبھی وقت نےساتھ نہیں دیا تو اس میں قصور کس کا ؟؟؟؟
کچھ سال بعد سنا پاگل ہو گئی ہیں ۔آج کل زنجیروں سے باندھ کر رکھتے ہیں
حالانکہ اب تو اپنا الگ گھر ہو گیا تھا بچے جوان ہو گئے تھے پھر بھی پاگل ہو گئی پتا نہیں کیوں ۔۔۔۔۔۔۔۔

حنا محلےکی سب سے خوبصورت لڑکی تھی باپ دیکھ کر کہتا
میری بیٹی تو ریکھا ہے اسکے لئے تو کوئی امیتابھ ہی آئے گا …
اس ریکھا نے ابھی سولہ برس بھی پورے نہیں کئے تھے کہ ایک اچھے خاندان کے اکلوتے بیٹے سے منگنی ہو گئی مگر حنا کے دل کا شہزادہ تو خالا زاد تھا دونوں ساتھ پڑھ رہے تھے آٹھ سال منگنی اور عشق دونوں چلے دونوں مناسب وقت کا انتظار کرتے رہے با لاخر خالا زاداد مقابلے کے امتحان میں پاس ہو کر گھومنے والی کرسی پر جا بیٹھا حنا نے جرات کی اور سب کے سمجھانے کےباوجود منگنی کی انگوٹھی اتار پھینکی ۔۔خالازاد جس کی پوسٹنگ اب دوسرے شہر میں تھی چپ سادھ کر بیٹھا رہا اس کی نظراور زاویہ نظردونوں بدل چکے تھے کم وقت میں زیادہ ترقی کے لئے اس نے باس کی بیٹی سے شادی کر لی ۔۔۔اب آٹھ سال کھلے بندوں عشق لڑانے والی لڑکی کا کیا بننا تھا ؟؟؟ اس کےحسن سے سب نے نظریں چرا لیں ماں باپ کے سینے کی سل بن گئی اب جوڑےتو واقعی آسمانوں پر بنتے ہیں اس لئے حنا بھی منتوں دعاوٴں کے سبب بالاخر بیاہی گئی ۔۔۔سیدھے سادے تقریباً باولے شاہد سے جسے دور نزدیک میں کوئی لڑکی نہیں مل رہی تھی ۔۔۔۔تو جو حنا کر چکی تھی اس کے بعد کوئی عزت سے بیاہ لے گیا یہ غنیمت نہیں تھا ؟؟؟؟ مگر محترمہ کو تو ایسی چپ لگی کہ مت پوچھیں ۔۔۔۔۔ بارہ تیرہ سال رو پیٹ کر گزرے پھر دورے پڑنے لگے آہستہ آہستہ آہستہ حواس جاتےرہے اور پھر پوری پاگل ہو گئی ۔۔۔
اب ایک اییسی بدنام لڑکی کی شادی ہوگئی ، گھر بس گیا اور کیا چاہئے تھا ؟؟؟؟
پتا نہیں پاگل کیوں ہو گئی ؟؟؟؟

حمیدہ گلف میں رہتی ہے سسر کا اپنا بزنس ہے ماشاءاللہ بھرا پراگھر ۔۔۔۔ساس کے آٹھ بچے حمیدہ کے چار ۔۔۔ماموں زادسے بیاہی ہے روایتی اقدار سے لپٹی فیملی ۔۔۔۔۔بچے بڑے ہو رہےہیں شوہر باپ کے ساتھ بزنس دیکھتا ہے ویک اینڈ پر کسی فلپینی لڑکی کی بانہوں کا سہارا بھی لے لیتا ہے ایک دو پیگ بھی چڑھا لیتاہے مرد بچہ جو ہے ۔۔۔۔رات گئے تھکا ہارا گھر آتا ہے تو اسے صرف نیند کی طلب ہوتی ہے حمیدہ کے دکھڑے کیسے سنے ؟؟؟ جاہل عورت گھر کے معاملات تک ہینڈل نہیں کر سکتی ۔۔۔۔ادھر حمیدہ کی ذاتی استعمال کی اشیاء تک ختم ہو چکی ہوتی ہیں ۔۔۔شاپنگ سیینٹر جا کر یہ چیزیں خریدنا نری بے شرمی ہے جو ان کے خاندان کی عورتیں نہیں کرتیں ۔۔۔۔ شوہر کے پاس ٹائم نہیں ۔۔۔ساس روایتی ہے جس کی واحد انٹرٹینمنٹ حمیدہ کو وہ تکلیفیں اٹھاتے دیکھنا ہے جو وہ اٹھاتی آئ ہے ۔۔۔۔۔سنا ہےحمیدہ کو کچھ دنوں سے پاگل پن کے دورے پڑ رہے ہیں ۔۔۔۔۔
بھلا اس کے گاوں کی کتنی عورتیں بیرون ِ ملک زندگی گزارسکتی ہوں گی ۔۔۔۔۔ اتنے عیش سے اپنوں کے بیچ محفوظ زندگی گزار رہی ہے پھر بھی دورے پڑے جا رہے ہیں ہے نا عجیب بات ۔۔۔۔
پتا نہیں یہ عورتیں پاگل کیوں ہو جاتی ہیں ؟؟؟؟؟

About Author

Daanish webdesk.

Leave a Reply

1 تبصرہ

  1. Bilkul such likha…. ziyadatar khawateen maal doulaat,, zaar zamen nahi chahtein… balky rashtoo ki suchai chahti hein…. aur wohi aj kal ky zamany mein napaid ho chuki hy… :'(

Leave A Reply

%d bloggers like this: