چائے اچھی تھی — (نثری نظم) — ڈاکٹر وحیدالرحمن خاں

0

چائے اچھی تھی
لیکن مہنگی پڑی ہے
آسمان سے
زمین پر آنا پڑا ہے
نظریں نیچی کرنی پڑی ہیں
صرف پرچم کو سرنگوں نہیں کیا
سرافراز مونچھ کو بھی
جھکانا پڑا ہے
ہتھیار پھینکنے پڑے ہیں
دھول دھپا
شاید ان کوہستانیوں کا شیوہ تھا
سو سہنا پڑا ہے
گالیاں سن کر
بے مزا ہونا پڑا ہے
مگر چائے بے مزا نہیں تھی
چائے اچھی تھی
لیکن مہنگی پڑی ہے

(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply


Parse error: syntax error, unexpected '<', expecting identifier (T_STRING) or variable (T_VARIABLE) or '{' or '$' in /home/daanishp/public_html/wp-content/themes/daanishv2/footer.php on line 20