غُصّہ کرنا سیکھئے ۔۔۔۔ حسن غزالی

0

غصّہ ایک آگ ہے جو کبھی کبھی ہمارے وجود میں ایسی بھڑکتی ہے کہ ہماری زندگی کو جھلسا دیتی ہے، لیکن یہ ایک تلوار بھی ہے____ ایسی تلوار جو ہمارا دفاع کرتی ہے۔ ہم میں سے اکثر اناڑی ہیں، اس تلوار کو بےدریغ استعمال کرتے ہیں، اور خود کے بھی گہرے زخم لگا لیتے ہیں۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم یہ تلوار چلانا سیکھیں اور اس میں مہارت حاصل کریں۔

غصہ کرنے کے کچھ آداب ہیں۔ اگر ہم غصہ کرنے کے تقاضے پورے کریں گے تو غصّہ زندگی کے راستے میں ملنے والے دشمنوں سے ہماری حفاظت کرے گا۔ غصّہ ایک انتہائی تجربےکار جرنیل کی طرح لڑے گا اور ہمیں مشکل جنگوں میں بھی فتح دلائے گا۔

غصّے کے پانچ آداب ہیں۔

وجہ:
سب سے پہلی بات یہ ہے کہ غصّہ کرنے کی کوئی وجہ ہونی چاہیے، اور یہ وجہ ایسی ہو جس کی عقل تائید کرے اور ہماری اقدار کے مطابق درست ہو۔

شخص:
غصّہ اسی پر کریں جس پر اصولی طور پر غصّہ کیا جانا چاہیے۔

وقت:
غصّے کا اظہار اسی وقت پر کریں جو موزوں ہو۔ کبھی غصّے کا اسی وقت اظہار کیا جانا ضروری ہوتا ہے اور کبھی بعد میں کسی مناسب وقت پر۔

حد:
غصّہ جس حد تک کرنا چاہیے اسی حد تک کریں۔ غصے کی حد کا شعور ہمیں غصّے کرنے کی وجہ سے ملتا ہے۔ ہم اکثر حد سے زیادہ غصہ کرتے ہیں اور کبھی کبھی حد سے بہت کم۔ ضروری یہ ہے کہ ہمیں اس کی بہت اچھی سمجھ ہو کہ کس حد تک غصہ کرنا ہے۔

انداز:
غصّے کے انداز کا خیال رکھنا بہت ضروری ہے۔ کیسا لہجہ ہو؟ الفاظ کیسے ہوں؟ الفاظ سخت یا سخت تر بھی ہوسکتے ہیں اور نرم بھی، اسی طرح لہجہ بھی نرم یا سخت ہوسکتا ہے۔

غصے میں نرم لہجے میں سخت الفاظ بھی کہے جاسکتے ہیں اور سخت لہجے میں نرم الفاظ۔

لہجے اور الفاظ کی سختی کا تعین پوری ذمے داری سے کریں۔

غصّے کے یہ آداب پڑھ کر ہمت جواب دینے لگتی ہے، لیکن ہم اسے سنجیدگی سے لیں، اور ذمےداری سے اس پر عمل کریں تو ہماری زندگی میں خوش گوار تبدیلیاں آنا شروع ہو جائیں گی۔

کوشش کی جائے کہ جس حد تک اس پر عمل کیا جا سکے عمل کریں۔ اگر کوئی ایسا شخص ہے جسے اپنے غصے پر قابو نہیں رہتا، اور دس بیس فیصد بھی ان آداب پر عمل کرنے لگے تو یہ بھی ایک بڑی کامیابی ہے۔

(ارسطو کے ایک قول کی شرح)

یہ بھی پڑھیئے: آداب مغلظات: لالہ صحرائی
(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply


Parse error: syntax error, unexpected '<', expecting identifier (T_STRING) or variable (T_VARIABLE) or '{' or '$' in /home/daanishp/public_html/wp-content/themes/daanishv2/footer.php on line 20