فیل ہونا بھی ایک نعمت ہے: خبیب کیانی

0

فیل! یہ لفظ سنتے ہی ہمارا ذہن فوراًـناکامی کے احساس کی طرف جاتاہے۔ بہت کم افراد اس لفظ کو اپنی ذات کے ساتھ جڑا دیکھنا یا سننا چاہتے ہیں۔
کچھ عرصہ پہلے انٹر نیٹ پر جوہانیس ہا شوفر نامی ایک پروفیسر نے اپنا سی وی ہر خاص و عا م کے لیے پیش کیا۔ ویسے تو یہ ایک عام سی وی ہی تھا لیکن اس میں موجودایک نئے پن نے اس کو پوری دنیا میں مقبول عام کر دیا۔ پروفیسر نے سی وی میں روایتی انداز میں اپنی کامیابیوں اور قابلیت کو اجاگر کرنے کی بجائے اپنی زندگی میں پیش آنے والی ناکامیوں کی تفصیل دی تھی ۔ راتوں رات پوری دنیا میں مشہور ہونے والا یہ سی وی بلا شبہ ایک جرأت مندانہ کاوش تھی۔پروفیسر سے جب اس سی وی کو بنانے کا مقصد دریافت کیا گیا تو پروفیسر کا کہنا تھا کے ایسا صرف اس لیے کیا گیا کہ لوگوں کو ناکامیوں اور ان کی اہمیت کے بارے میں سوچنے کے لیے آمادہ کیا جا سکے، اگر کہیں کوئی یہ سوچ رہا ہے کہ پروفیسر ایک خوش قسمت انسان ہے جس نے زندگی میںجس چیز کے لیے بھی کوشش کی اس میں کامیاب ہوا تواس کو یہ بتایا جا سکے کہ کامیابیوں کی پیچھے ہمیشہ بہت سی ناکامیاں ہوتی ہیں۔ یہ ناکامیاں اور ان سے حاصل ہونے والا تجربہ ان کامیابیوں سے کہیں زیادہ قیمتی ہوتا ہے جو انسان زندگی میں کبھی نہ کبھی کسی نہ کسی موڑ پر حاصل کرہی لیتا ہے۔ پروفیسر ہاشوفر کی اس کاوش کو پوری دنیا میں خوب پزیرائی ملی۔پروفیسر کا کہنا ہے آج تک اس نے جتنا بھی علمی و تحقیقی کام کیا ہے وہ اتنی توجہ حاصل نہیں کر پایا جتنی کہ اس ناکامیوں کی سی وی کے حصے میں آئی۔ لوگو ں نے فیل ہونے اور ناکام ہونے کی اہمیت کو سمجھا اور اس بات کو بھی کے فیل ہونے کو چھپائے جانے کے بجائے منایا جانا چائیے کیونکہ فیل ہونا اس بات کی نشانی ہوتا ہے کہ ہم نے کوشش کی۔ فیل ہونا اور ناکامی کا منہ دیکھنا کسی فرد کو اچھا نہیں لگتا لیکن دنیا میں کامیابی کی تاریخ کا مطالعہ کریں تو یہ بات کھل کر سامنے آتی ہے کہ کامیابی کا ہما ہمیشہ ان انسانوں کے سر بیٹھتا ہے جو ناکامیوں سے نہ گھبرا ئیں اوراپنی ہر ناکامی سے سبق سیکھ کر تواتر سے کوشش جاری رکھیں۔ تو میرے عزیزو، کوشش کرو اور کامیابی ملے تو شکر ادا کرو اور اگر حصے میں ناکامی آئے تو اور بھی زیادہ شکر ادا کرو کیونکہ یہ بھی ایک نعمت ہے جو نصیب سے ملتی ہے۔اور جس کو یہ نعمت مل گئی اس کو دانائی سے نواز کر ایک بہتر سے بہترین فرد میں تبدیل کر دیتی ہے۔ تو پھر ہو جائے ایک کوشش اور؟کیا خیا ل ہے؟

About Author

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: