کورین چُوسک تہوار۔ Chuseok 추석 ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ عبدوہو محمد

0

‎کوریا کے دو اہم ترین سماجی تہواروں میں سے ایک کا نام چُوسک ہے جو موسم خزاں کے آغاز پر ستمبر یا اکتوبر کے اوائل میں منایا جاتا ہے یہ تہوار کوریا میں چینی لونر سال Lunar year کے آٹھویں مہینے کی 14 سے 16 تاریخ تک تین دن کیلئے منایا جاتا ہے، اکثر و بیشتر عیسوی سال کے نویں مہینے یعنی ستمبر میں منایا جاتا ہے جبکہ کبھی کبھار اکتوبر میں ہوتا ہے، یہ تہوار جنوبی کوریا اور شمالی کوریا میں ایک ساتھ منایا جاتا ہے۔

اس سال چُوسک 12 سے 14 ستمبر کو منائی جارہی ہے پچھلے سال 23 سے 25 ستمبر تھی، 2020 کو 30 ستمبر سے 2 اکتوبر تک ہو گی اور 2021 کو 20 سے 22 ستمبر تک منائی جائے گی۔

چُوسک فصل کی کٹائی کا موسم ہے جو گرمیوں کے اختتام اور خزاں کی آمد پر منایا جاتا ہے عمومی طور پر یہ ثقافتی تہوار ہے لیکن اس کی کچھ تاریخ بدھ ازم اور کنفیوشش ازم میں بھی پائی جاتی ہے جبکہ کچھ کتابوں کے مطابق اس کی جڑیں شامن ازم Shaminism یا Sinism سے ملتی ہیں۔

تاریخ کی بعض کتابوں میں مزکور ہے کہ چُوسک کا تہوار دوسری صدی عیسوی میں شلا بادشاہت کے تیسرے بادشاہ کے دور میں شروع ہوا تھا جب دو ٹیموں کے درمیان فصل کی کٹائی کا مقابلہ ہوا تھا جسے Gabae 가배 کا نام دیا گیا تھا، کچھ وقت گزرنے کے بعد اس تہوار میں فصل کٹائی کے ساتھ کپڑوں کی بُنائی، تیر اندازی، مارشل آرٹس اور بےشمار دوسرے مقابلے اس تہوار کا حصہ بن گئے۔ یوں چُوسک کا تہوار ایک مرکزی میلے کا درجہ اختیار کرگیا۔

ہر گاؤں شہر سے نوجوانوں کی ٹیمیں مہینوں پہلے مختلف کھیلوں کی تیاری شروع کر دیتیں، جیتنے والی ٹیم کو بادشاہ کی طرف سے انعامات کی بارش کی جاتی اور کھلاڑیوں کو ہیرو کی طرح عزت دی جاتی تھی۔

چُوسک والے دن عوام کچھ کام ادا کرتی ہے جیسے گھر میں مختلف کھانے پینے کی چیزیں بنائی جاتی ہیں جن میں چاول کا Songpyeon 송편 ہے یہ چاول کے آٹے سے بنایا گیا کیک ہوتا ہے، اس کے ساتھ مختلف رنگوں والا Hangwa ہوتا ہے کوریا میں شادی بیاہ و سالگرہ کی تقریبات میں بھی Hangwa ہی کھایا جاتا ہے۔

اس کے بعد سب سے اہم چاول کی شراب Baeksoju 백수주 اور Sindoju 신또주 اور Dongdongju اور Jang Baeksoju, اور Jayang Baeksoju شامل ہیں یہ اتنی زیادہ مشہور ہے کہ چُوسک کو اس شراب کی وجہ سے Baekju بھی کہا جاتا ہے۔ چُوسک والے دن کورین بہت زیادہ شراب پیتے ہیں اور عام طور پر یہ یقین کیا جاتا ہے کہ اگر آپ وہی شراب پی رہے ہیں جو آپ کے آباواجداد پیتے تھے تو پھر آپ کو کسی معاملے میں ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے قسمت بہت اچھی ہو گی۔

ان کے علاوہ Pancake اور بڑے گوشت سے تیارکردہ Bulgogi بھی بڑے شوق سے کھائی جاتی ہے۔

چوسک والے دن لوگ بڑے شہروں سے اپنے آبائی گھروں کو جاتے ہیں، چُوسک کے دن سے دو اہم کام وابستہ ہیں ان میں ایک تو گھر کے اندر فوت شدہ آبا و اجداد کیلئے دعائیں مانگی جاتی ہیں جسے Charye차례 کہتے ہیں اور پھر پہاڑوں یا جنگلوں میں ان کی قبروں پر حاضری دی جاتی ہے جسے Seongmyo 성묘 کہتے ہیں، فوت شدگان کی یاد میں قبر کے قریبی علاقے کی اچھی طرح صفائی کرتے ہیں اور اس میں پودے و درخت لگاتے ہیں۔

کوریا میں عام طور پر مون سون کی بہت زیادہ بارشیں ہوتی ہیں اور سردیوں میں شدید برف باری ہوتی ہے جس کی وجہ سے یہ دونوں موسم بہت مشکل ہوتے ہیں جب روزمرہ کے کام کرنے دشوار ہو جاتے ہیں ایسے میں کورین سمجھتے ہیں کہ خزاں سال کا سب سے اچھا موسم ہے کہ اس میں بادل بالکل صاف ہوتا ہے، آب و ہوا میں شدت نہیں ہوتی کہ فصل کی کٹائی کرنا بہت آسان ہوتا ہے۔

چُوسک پر ایک بہت اچھا رواج ایک دوسرے کو گفٹ دینا ہے کسی کے گھر جاتے ہوئے گفٹ لیکر جانا لازمی سمجھا جاتا ہے گفٹ دینے کیلئے کیک مٹھائیاں کی بجائے عام استعمال کی روزمرہ چیزوں کو اہمیت دی جاتی ہے گفٹ دینے کا رواج وقت کے ساتھ ساتھ بدلتا جا رہا ہے جیسے ساٹھ کی دہائی میں چاول چینی صابن کا گفٹ دیا جاتا ہے پھر ستر اسی کی دہائی میں کوکنگ آئل، ٹوٹھ پیسٹ کافی کا رواج آ گیا، پھر نوے میں کُکر، ٹیلی ویژن نے جگہ لے لی اور اس صدی میں زیتون کا تیل، مختلف پھلوں و سبزیوں کے سرکہ جات تھے اور اب الیکٹرونکس گفٹ دئیے جاتے ہیں۔

گفٹ دینے کیلئے ایک بات کا خیال رکھا جاتا ہے کہ وہ چیز دی جائے جو اگلے کے کام آئے اور اسے ضرورت بھی ہو تا کہ اس کے خود خریدنے کے پیسے بچ جائیں۔ کوریا ایک جدید ترین اور امیر ملک ہے اس کے باوجود آج بھی چاول، کوکنگ آئل، صابن، پیسٹ، جرابیں بنیان وغیرہ کے تحفے دئیے جاتے ہیں جبکہ پاکستان میں عید کے مواقع پر کیک مٹھائیوں پر اپنے پیسے ضائع کر دئیے جاتے ہیں اور اگلے کے کسی کام بھی نہیں آتے کیا ہی بہتر ہو اگر پاکستان میں عید جیسے موقعوں پر کیک وغیرہ پر پیسے ضائع کرنے کی بجائے دوسری اشیاء کے تحفے دینے کا رواج آ جائے۔

اس دن کوریا کے روائتی کپڑے پہنے جاتے ہیں جسے Hanbuk 한복 کہا جاتا ہے۔

پچھلے چند سالوں سے کورین حکومت نے چوُسک کی چھٹیوں میں عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولت دینے کیلئے ہائی وے پر تمام ٹال پلازہ فری کر دئیے جاتے ہیں، شہروں میں پارک، میوزیم اور سرکاری پارکنگ تک کی ٹکٹ ختم کر دیتے ہیں تا کہ عوام گھر بیٹھنے کی بجائے زیادہ سے زیادہ باہر نکلے سفر کرے اور فیملی کے ساتھ تاریخی و سیاحتی مقامات کی سیر کرے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: