پڑوسن ۔۔۔۔۔ رشید ارشد

0

صبح اٹھتے ہی حسب معمول میں نے کھڑکی کا پردہ ہٹایا تو ڈیوڑھی پپیتےکے درخت پر نظر پڑی۔ یہ درخت اب کافی بڑا ہوگیا تھا اور اس میں پپیتوں کے گچھے لگ چکے تھے۔ کچھ پپیتے تو پک بھی چکے تھے ۔ پپیتے مجھے پسند بھی بہت ہیں۔ پکے ہوے پپیتے دیکھ کر منہ میں پانی بھر آیا۔ چھٹی کے روز توڑوں گا میں نے سوچا ۔

دو سال پہلے جب میں نے یہ گھر کرائے پر لیا تھا تو پپیتے کا درخت بہت چھوٹا تھا ۔ ڈیوڑھی میں پھولوں کی کیاری کے آخری سرے پر گھر میں یہ واحد درخت تھا اس لیے میں نے اس کی دیکھ بھال میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھی ۔ ہر صبح نلائی ،شام کو پانی دیتا اور گا بگاہ کھاد بھی ڈال دیتا ۔ دیکھتے ہی دیکھتے پپیتے کا درخت دیوار سے بھی اوپر نکل گیا۔

ہمارے ساتھ والا مکان خالی ہوا تو اس میں نیے کریئےدار آگیے۔ پتا چلا کے ایک عورت اپنے چار بچوں کے ساتھ منتقل ہوئی ہے۔ بچوں کی عمریں چھہ سے تیرہ سال کے درمیان ہوں گی! محلے میں نئے کرائے داروں کے بارے میں طرح طرح کی چہ میگویاں ہونے لگیں۔ میں نے اپنی تنہا پسندی کے باعث ان کی طرف کوئی توجہ نہ دی ۔ ویسے بھی کسی کے معملات کو کریدنا میری عادت نہیں۔ آج چھٹی کا روز تھا۔ میں نے کھڑکی کا پردہ ہٹایا تو دیکھا کہ کئی اور پپیتے بھی پک چکے تھے۔ آج میں نے ان کو تاڑنے کا ارادہ کیا ۔ ڈیوڑھی میں آ کر گیٹ کے پاس سے صبح کا اخبار اٹھایا اور برآمدے میں بیٹھ کر پڑھنے لگا۔

تھوڑی دیر میں کچھ آوازیں آنے لگیں ۔ میں نے خیال کیا کے گلی میں بچے کھیل رہے ہوں گے ! میں پھر اخبار پڑھنے میں مصروف ہوگیا۔ آوازیں اور صاف اور صاف سنائی دینے لگیں۔ مجھے شک ہوا کہ کوئی میرے گھر میں گھس آیا ہے ۔ میں نے بیٹھے بیٹھے گیٹ کی طرف دیکھا ۔ گیٹ بند تھا لہٰذہ کسی کے اندر آنے کا امکان نہ تھا ۔ میں پھر اخبار پڑھنے لگا ۔ آوازیں بدستور آرہی تھی اور بہت قریب سے ۔ میں اخبار رکھ کر باہر ڈیوڑھی میں آیا تو دیکھا پڑوسن کے بچے دیوار پر چڑھ کر پپیتے توڑ رہے تھے ۔ میں انہے منع کرنے کو آگے بڑھا تو جالی میں سے دیوار کے باہر پڑوسن بھی نظر آئی ۔ وہ اپنے ہاتھوں میں چھوٹے بچے کو پکڑ کر دیوار پر چرھنے میں مدد کر رہی تھی۔ تمام پکے ہوئے پپیتے توڑے جا چکے تھے۔ مجھے ان کی ہرکت پر بہت غصہ آیا اور پڑوسن سے سخت لحجے میں کہا :

تمہیں شرم نہیں آتی! بچوں کو چوری سے منہ کرنے کے بجائے ان کی مدد اور ہوصلہ افزائی کر رہی ہو۔ تم بچوں کو چور بنانا چاہتی ہو؟ میں سمجھی آپ گھر میں نہیں پڑوسن نے بڑی معصومیت سے جواب دیا۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

About Author

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: