کیا بات تھی جناح کی —- ابن اظہر

0

ستم ظریفی ہے کے اب ٹھیک طرح سے یہ بھی یاد نہیں کہ اردو زبان میں قائد اعظم کے متعلق آخری کتاب کب پڑھی تھی یا پڑھی بھی تھی کہ نہیں – لے دے کے انگریزی میں اسٹینلے وولپرٹ کی “جناح آف پاکستان” ہی یاد آتی ہے – پروفیسر سعید راشد علیگ صاحب کی کتاب ” گفتار و کردار قائد اعظم” نظر سے گزری جسے بک کارنر شو روم والوں نے نہایت اہتمام سےشایع کیا ہے – گو کے کتاب تین دہائی پرانی ہے لیکن قائد اعظم بیسویں صدی کی دوسری دہائی کے آخری سالوں میں بسنے والے پاکستانیوں سے براہ راست مخاطب نظر آتے ہیں –

– کتاب سے چند دلچسپ اقتباسات درج ذیل ہیں- پڑھئے اور سر دھنیے

  • ۔ شملہ مذاکرات میں اس وقت کے وائسراے لارڈ وویل نے کہا تھا یہ شخص تو اپنی سوچوں میں بھی اسٹریٹ Straight ہے۔
  • -” لیاقت علی خان کے یہاں کھانے پر فضول خرچی کی بات چلی تو قائد نے کہا “میں سٹریٹ لائٹ میں پڑھا ہوں -اس لئے پیسے کی قدر کرتا ہوں
  • – یہ دیکھ کر کے رسول کریم کا نام قانون دانوں کی فہرست میں سب سے اوپر ہے ، قائد اعظم نے لنکنز ان میں داخل لینے کا فیصلہ کر لیا
  • میں نے لندن میں رہتے ہوے والد صاحب سے اداکاری کا شعبہ اختیار کرنے کے لئے اجازت طلب کی لیکن ان کے ایک جملے نے اپنا فیصلہ بدلنے پر مجبور – کر دیا اور وہ تھا ……اپنے خاندان سے دغا نہ کرو
  • – جزئیات میں جانے کا یہ عالم تھا کہ سوٹ سلواتے تو کوٹ کی آستین کے تینوں بٹنوں کے درمیانی فاصلے کو بھی نظر میں رکھتے
  • – اتنی محنت کے بعد ریٹائرمنٹ کی زندگی اگرچہ میرا حق تھا لیکن اس کے باوجود میں نے ایسا کرنا پسند نہیں کیا
  • – ” کیرئیر کے آغاز میں پندرہ سو ماہوار کی نوکری کی پیشکش پر کہا ” میں آپکا ممنون ہوں لیکن میں اتنی رقم ہر روز کمانا چاہتا ہوں
  • ایک مقدمے کے دوران جسٹس نے بھڑک کر کہا ذہن میں رکھیں آپ کسی تھرڈ کلاس میجسٹر ٹ سے مخاطب نہیں – جواب میں فرمایا ” جناب والا ! آپ -” کے سامنے بھی کوئی تھرڈ کلاس وکیل نہیں ہے
  • – ایک موقع پر کہا عھدوں کے پیچھے مت بھاگو -عہدوں کو اپنے پیچھے بھاگنے دو
  • “- ایک موقع پر زبان کے حوالے سے ذکر ہوا تو کہا ” میں فارسی جانتا ہوں، اردو کیا چیز ہے
  • “- تا حیات مسلم لیگ کا صدر بننے کی پیشکش ہوئی تو فرمایا ” مجھے تا حیات صدر منتخب ہونا پسند نہیں
  • “- ایک موقع پر کسی کے لئے سفارش کا کہا گیا تو فرمایا “اگر میرا بیٹا ہوتا تو اس کے لئے بھی سفارش نہ کرتا
  • – ایک موقع پر کہا ہر اچھے وکیل میں تین خوبیاں ہونی چاہیئں – فیس مناسب لے،کیس پر خوب محنت کرے اور عدالت سے مرعوب نہ ہو
  • ایک موقع پر کہا اگر میں جیل جاؤں گا تو رسائل اور کتابیں پڑھوں گا خوب فرصت ہو گی، گاندھی اور نہرو کی طرح کتابیں لکھ سکوں گا جن کی لاکھوں جلدیں – فروخت ہوں گی
  • (سورہٴ فیل ) میں نے قرآن کا انگریزی ترجمہ کئی بار پڑھا ہے مجھے اس چھوٹی سی سورت جس میں ابابیلوں کا ذکر ہے بڑی تقویت ملتی ہے
  • – ایک صحافی کے پوچھنے پر کہ کیا آپ مسلم انڈیا کی تاریخ لکھ رہے ہیں ، ہنس کر کہا میں تاریخ لکھ نہیں بنا رہا ہوں
  • یہ پتہ چلنے پر کہ کچھ خواتین مسلم لیگ کے لئے اپنے زیورات دینا چاہتی ہیں کہا ” میں سیاست میں جذباتیت کو پسند نہیں کرتا -ان خواتین کو چاہیے پہلے “- اپنے شوہروں سے پوچھ لیں
  • لاہور کا وہ علاقہ جہاں اب گلبرگ ہے یہاں قائد نے چھ سو کنال اراضی خریدی تھی-بعد میں یہ علاقہ لاہور امپرومنٹ ٹرسٹ نے قوائد کے تحت حاصل – کر لیا تھا
  • – ایک موقع پر کہا مسلمانوں کا لیڈر بننا بہت مشکل ہے -خاص کر پیسے کے معاملے میں مسلمان لیڈروں کو احتیا ط برتنی چاہیے
  • جمعے کے روز عربی کا خطبہ نہایت عقیدت سے سنتے رہے بعد میں مولانا مظہر علی کامل سے فرمایا ” کیا ہی اچھا ہوتا آج یہ خطبہ اردو میں دیا جاتا یا اس کا ساتھ ” – ساتھ ترجمہ کر دیا جاتا تاکہ لوگ اس کو اچھی طرح سمجھ سکتے
  • – ایک دوست کی گاڑی میں گالف کا سامان دیکھ کر کہا کبھی کبھی میرا بھی جی چاہتا ہے کے گالف کھیلوں
  • آزادی سے چند ماہ پہلے بیگم جہاں آرا سے کہا میں پندرہ مہینوں سے پاکستان کے لئے ایک آئین ڈرافٹ کرنے میں مصروف ہوں جو فرانسیسی آئین پر- مشتمل ہے
  • قائد اپنے گھر میں ضرورت سے زائد بتیوں کو گل کرنے کا خاص خیال رکھتے – یہاں تک کے میزبان کے گھر بھی زائد بتیاں جو ان کے لئے جلائی جاتیں – بھجانے پر اصرار کرتے
  • کہا ” یاد رکھو کمانا اتنا مشکل نہیں ہوتا جتنا اس کو سلیقے اور دور اندیشی سے خرچ کرنا”-
  • اخبار ڈان میں قائد کی تصویر چھاپنے کے لئے فوٹوگرافر گھر پہنچا تو میز پر پڑی ایک کتاب جس پر انگریزی میں “الحدیث ” لکھا تھا قائد کو دی کے تصویر میں- آجاے – پاس کتابوں کی الماری سے مسلم لیگ کا آئین اٹھایا اور ڈان اخبار ہاتھ میں پکڑ کر کہا یہ ٹھیک ہے
  • – افواج کے بارے میں کہا پاکستان کی اپنی فوج ہو گی میں کرایے کے افسر اور سپاہی پسند نہیں کرتا
  • ایک موکل کی فیس کی کمی میں مطالبے پر کہا “میں رولس رائس ہوں جو رولز رائس خریدنے کا خواہش مند ہو اسے رولس رائس کی قیمت ادا کرنی چاہیے
  • – فرمایا سیکھنے کے دو ہی طریقے ہیں یا بزرگوں کی بات مانو کے ان کا تجربہ زیادہ ہوتا ہے اور یا پھر خود تجربے کرو اور منزل پاؤ – مجھے دوسرا طریقہ پسند ہے
  • -” سیاست میں آنے کے لئے کسی کو مشورہ دیتے ہووے کہا ” پہلے پیسا پیدا کر لو پھر قوم کی خدمت کرنا
  • “- فوج کے ایک افسر کو کہا ” جو شخص اپنے دماغ سے سوچتا ہی نہ ہو اسے فوج میں رہنے کا کوئی حق نہیں
  • “- بیگم جہاں آرا سے پوچھا کیا آپ مغربی جمہوریت پر ایمان رکھتی ہیں وہ بولیں نہیں قائد نے کہا “نہ ہی مجھے ہے
  • ” ایک جگہ فرمایا ” آپ کو معلوم ہونا چاہیے جو لوگ زندگی کی حقیقتوں سے فرار ہوتے ہیں تاریخ میں انکا کیا حشر ہوتا ہے
  • تقسیم کے بعد پاکستانی پرچم پر بحث جاری تھی -پانچ صوبوں کی نمائندگی کے لئے پانچ ستارے تجویز ہووے تو سردار نشتر نے کہا صوبوں کی تعداد بدلنے پر مشکل ہو گی قائد نے کہا ایسی صورت میں ہم پانچ ستاروں کی توجیہ یہ کریں گے کے اس سے مراد پنج تن پاک ہیں –
  • شالیمار باغ میں تقریب میں جانے کے لئے پہلے وقت سے پہلے پہنچ رہے تھے تو ڈرائیور کو ایک فرلانگ پہلے روک لیا دیر سے جانے کی طرح پہلے پہنچنا بھی ٹھیک نہیں ہوتا
  • وائی ایم سی اے ، ینگ مین کرسچین اسوسیشن کے بارے میں کہا یہ تنظیم اچھی مثال ہے تھوڑے سے افراد نے دنیا کے کونے کونے میں شاخیں قائم کر دی ہیں
  • “- ایک بار کسی سے پوچھا ” کیا پاکستان میں کافی پیدا ہوتی ہے پوچھ کر مجھے بتانا
  • – اتا ترک کی سوانح حیات “گرے وولف” پڑھنے کے بعد بیٹی سے کہا اسے پڑھنا یہ بہت اچھی کتاب ہے
  • – کسی نے شراب کے بارے میں پوچھا تو کہا بے شک پاکستان میں شراب پر پابندی ہو گی
  • – ایک جگہ فرمایا اسلام میں مذہب اور سیاست دو علیحدہ چیزیں نہیں ہیں
  • – خواتین کے سیاسی اور سماجی کارکن پر کام کے لئے کہا مجھے امید ہے وہ صرف سماجی تیتلیاں نہیں بنیں گی کچھ مفید کم بھی کریں گی
  • – قلم اور تلوار کی طاقت کے علاوہ ایک تیسری طاقت بھی ہے اور وہ ہے عورتوں کی طاقت
  • – ایک صحافی نے جب یہ طنز کیا کے کبھی ا آپ بھی کانگریس میں تھے تو کہا جی ہاں کبھی میں پرائمری جماعت میں بھی تھا
  • – کرنل صفدر کو ملاقات کا شرف حاصل ہے – پاکستان سے پہلے ان سے ملے تو گفتگو میں ان کے فوجی محکمے آرڈیننس کے متعلق دلچسپی سے پوچھتے رہے
  • – کسی نے دس کے نوٹ پر آٹو گراف لینے کی کوشش کی تو ہاتھ کھینچ لیا اور کہا پیسے کو لازمی طور پر گردش میں رہنا چاہیے
(Visited 1 times, 1 visits today)

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: