ٹکٹ ٹکٹ۔۔۔ محمد امانت اللہ

0

 پی – ایس – ایل کا فائنل لاھور میں ہونے جا رہا ہے ۔ اسکی کامیابی کے لیے دعاگو ہوں ۔ قوم میں جوش و خروش پایا جا رہا ہے ۔یہ ایک فطری عمل ہے۔ ٹکٹیں کٹ رہی ہیں اور وہ کاٹ رہے ہیں جنکی ٹکٹ کٹنے والی تھی ۔ سیاست میں ٹکٹ کی بڑی اہمیت ہوتی ہے ۔ پارٹی ٹکٹ فروخت کرتی ہے کڑوڑوں روپوں میں جو خریدتا ہے وہ اپنا حق سمجھتا ہے اربوں وصول کرنے کا اس ٹکٹ کے بدلے۔ سیاست میں سیکھنے اور سکھانے کا عمل درحقیقت تجربوں سے استفادہ حاصل کرنا ہوتا ہے ۔ انداز تبدیل ہو جاتے ہیں مگر مقصد ایک ہی ہوتا ہے ٹکٹوں کی وصولی۔ جن لوگوں کو سینیما کی ٹکٹیں بلیک کرنے کا تجربہ تھا ان کے تجربے سے فائدہ اٹھایا جارہا ہے۔ لاھور کے معصوم شہریوں کو ٹکٹوں کے پیچھے لگا دیا گیا ہے۔ ٹکٹیں شاٹ لگنے سے قبل ہی شاٹ ہو گئیں ۔ بلیک آوٹ میں نہیں دن کی روشنی میں بلیک ہو رہی ہیں۔ عوام کو کون سمجھائے ہر ٹکٹ وہ ٹکٹ نہیں ہوتی کچھ ٹکٹ کٹ جاتی ہے ، کچھ کاٹ دی جاتی ہے ، کچھ فروخت ہو جاتی ہے اور کچھ خرید لی جاتی ہے ۔ مگر سب سے حیرت انگیز وہ ٹکٹ ہوتی ہے جو کسی پر لگ جاتی ہے۔

About Author

Daanish webdesk.

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: