افغانستان: دنیا کے کمزور ترین ملکوں میں سے ایک۔ کاشف نصیر

0

افغانستان دنیا کے کمزور ترین ملکوں میں سے ایک ہے، اسکی حکومت بے ساکھیوں پر کھڑی ہے، مسائل سے نبرآزما ہونا تو دور کی بات، اسے قائم رہنے کے لئے بھی دنیا کی مدد چاہئے۔ اگر آپکے کچھ لوگ وہاں کسی دور دراز علاقے میں روپوش ہیں تو اس میں انکا کم اور آپکا قصور زیادہ ہے۔ جب وہ سرحد پار کررہے تھے تو کیا آپ ستو پی کر سو رہے تھے؟ اگر آپ دنیا کا پانچواں سب سے بڑا ملک ہونے، بقول آپکے سب سے بہترین انٹلیجینس ایجنسی رکھنے، شاہانہ اخراجات والی چھٹی سب سے بڑی فوج پالنے اور جدید ترین ہتھیار کی ڈور میں شامل ہونے کے باوجود ایبٹ آباد اسامہ بن لادن اور کوئٹہ میں ملا اختر منصور کا پتہ نہ لگاسکے تو افغانستان پھر افغانستان ہے، اس لئے اپنے لئے بلاوجہ کے نئے دشمن پیدا نہ کریں۔ افغانستان نے جب اقوام متحدہ میں پاکستان کی مخالفت کی تھی تو وہ ظاہر شاہ کی بادشاہت میں جکڑا ہوا تھا۔ لیکن پھر اسے کمیونزم نے آن گھیرا جسکی راکھ سے امارات اسلامی نے جنم لیا۔ جس طرح آپ نے امارت قائم کی، اسی طرح امارت کے سقوط اور اسلامی جمہوریہ کے ظہور میں آپ کا کردار سب سے اہم تھا لیکن کیا وجہ ہے کہ حامد کرزئی، عبداللہ گل اور اشرف غنی آپ سے کھینچے کھینچے رہتے ہیں؟ کیا یہ صرف آپکی خارجہ پالیسی کی ناکامی ہے یا پھر آپ سرحد کی دوسری طرف کسی ڈبل گیم میں بھی ملوث رہے ہیں؟

سچ تو یہی ہے کہ پرویز مشرف نے جس خطرناک ڈبل گیم کی ابتداء کی، آپ آج تک آپ اسی میں الجھے ہوئے پیں۔ ایک طرف طالبان تو آپ کابل سے نکال باہر کرنے میں برابر شریک رہے تو دوسری طرف کسی نہ کسی طرح انہیں ڈبل گیم میں اپنا اثاثہ بنائے رکھا۔ جاننے والے اچھی طرح جانتے ہیں کہ ملا عمر، ملا اختر منصور اور موجودہ امیر ہمیشہ سے پاکستان میں ہیں مگر دوسری طرف آپ امریکہ کو خوش رکھنے کی اپنی سی کوشش میں انسانی حدوں کو پیچھے چھوڑنے میں بھی کبھی پیچھے نہیں رہے۔ سانحہ لال مسجد کی سفاکیت پرویز مشرف کی شیطانی دماغ کا کلامکس تھی، امریکہ تو رام نہ ہوا، ٹی ٹی پی پلے پڑ گئی۔ پس پردہ سفارتی کوششوں سے افغانستان کی موجودہ حکومت کے ساتھ اچھے تعلقات قائم کرنے ہی میں دونوں جانب کی قوتوں کا فائدہ ہے۔ ویسے بھی موجودہ حکومت کے اسی فیصد لوگ وہی سابقہ جہادی ہیں جو ستر اور اسی کی دہائی میں آپکے اتحادی تھے، اس واسطے وہ آپکو اور آپ انہیں اچھی طرح جانتے ہیں۔ عبداللہ عبداللہ احمد شاہ مسعود کے دست راست ہیں اور ہم سب جانتے ہیں کہ احمد شاہ مسعود سے بھلے آپکے تعلقات خراب ہوگئے ہوں لیکن انہیں آج بھی افغان جہاد کا سب سے بڑا ہیرو قرار دیا جاتا ہے۔

About Author

Daanish webdesk.

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: