پروفیسر کے نام خطوط (طنز و مزاح) ——– خامہ خراب

2
  • 55
    Shares

گزشتہ دنوں مال روڈ سے گزرتے ہوئے ایک فائل ملی جو کسی یونیورسٹی کے پروفیسر صاحب کی تھی۔ فائل میں چند افسروں کے خطوط تھے۔ قارئین کی دل چسپی کے لیے ان خطوط کو ذیل میں پیش کیا جا رہا ہے۔
پروفیسر صاحب اور یونی ورسٹی کا نام صیغۂ راز میں رکھا گیا ہے۔ فائل پروفیسر صاحب کو یونی ورسٹی کے پتے پر ارسال کر دی گئی ہے۔


پرنسپل بنام پروفیسرعزت مآب
استاد جی!
آپ کو ہدایت کی جاتی ہے کہ کیمپس میں موجود گملوں، کرسیوں اور بلبوں کی کل تعداد کے بارے میں دور روز میں معلومات فراہم کریں۔ اس ضمن میں ’شماریاتی طریقۂ تحقیق‘ معاون ثابت ہوگا۔ توقع ہے کہ آپ ان دو دونوں میں بھی اپنی تحقیقی سرگرمیاں ترک نہیں کریں گے۔
یکم اکتوبر۲۰۱۸ء                        پرنسپل
________
ڈائریکٹر اسپورٹس بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
آپ کو تاکید کی جاتی ہے کہ
۱۔ لُڈو کے کھیل میں مہارت رکھنے والے سو طلبہ و طالبات کی فہرست مرتب کریں۔
۲۔ وڈیو گیم کھیلنے والے سو اناڑی طلبہ و طالبات کی فہرست ترتیب دیں۔
یہ فہرستیں دو دن کے اندر تیار کرکے ارسال کریں۔ توقع ہے کہ آپ تحقیق کی بازی میں میں شرکت کرتے ہوں گے۔
۵ اکتوبر۲۰۱۸ء                             ڈائریکٹر سپورٹس
________
چیف لائبریرین بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
آپ کو تاکید کی جاتی ہے کہ لائبریری میں تمام پھٹی پرانی کتابوں کی فہرست تیار کریں۔ یہ فہرست پرسوں تک ارسال کر دیں۔ توقع ہے کہ آپ لائبریری میں فہرست مرتب کرنے کے دوران کوئی تحقیقی مقالہ بھی سپردِ قلم کریں گے۔
۹ اکتوبر ۲۰۱۸ء                       چیف لائبریرین
________
کنٹرولر ایگزامینیشن بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
آپ کو ہدایت کی جاتی ہے کہ ایک روز میں شش ماہی امتحان کی ڈیٹ شیٹ تیار کریں۔ آئندہ پانچ دنوں میں امتحانی عمل مکمل کریں اور امتحان کے خاتمے کے بعد دو دن میں پرچوں کی جانچ کریں اور اسی دن نتائج کی فہرست ارسال کریں۔توقع ہے کہ آپ تحقیق کے امتحان سے بخوبی گزر رہے ہوں گے۔
۱۴اکتوبر ۲۰۱۸ء                     کنٹرولر ایگزامینیشن
________
ڈائریکٹر کوالٹی ایجوکیشن سینٹر بنام پروفسر
عزت مآب استاد جی!
معیارِ تعلیم میں بہتری کے لیے نصاب میں تبدیلی ضروری ہے۔ آپ کو تاکید کی جاتی ہے کہ ایک ہفتے میں ایم۔ ایس۔ سی، ایم۔ فل اور پی ایچ۔ڈی کے نئے نصاب مرتب کریں۔ واضح رہے کہ نصاب عالمی معیار کے عین مطابق ہوں۔ توقع ہے کہ آپ ذاتی طور پر معیارِ تحقیق میں بہتری کے لیے کوشاں ہوں گے۔
۲۱ اکتوبر ۲۰۱۸ء                      ڈائریکٹر کوالٹی ایجوکیشن سینٹر
________
ہیڈ آف دی ڈیپارٹمنٹ بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
آپ کو ہدایت کی جاتی ہے کہ کل تک ایک فہرست مرتب کریں جس میں ان موضوعات کا ذکر ہو جو آپ نے گزشتہ ماہ ایم۔ ایس۔ سی، ایم۔ فل اور پی ایچ۔ڈی کی جماعت کو پڑھائے ہیں۔ نیز یہ بھی واضح کریں کہ ان موضوعات کی تدریس کے لیے نصاب کے علاوہ آپ نے کن اضافی معاون کتب کا مطالعہ کیا ہے؟ توقع ہے کہ آپ تدریس کے ساتھ ساتھ تحقیق کے میدان میں بھی سرگرم ہوں گے۔
۲۴ اکتوبر ۲۰۱۸ء                       ہیڈ آف دی ڈیپارٹمنٹ
________
ڈین آف فیکلٹی بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
آپ کو ہدایت کی جاتی ہے کہ تحقیق کی طرف خصوصی توجہ دیں۔ آپ نے اس سال کتنے تحقیقی مقالے تحریر کیے ہیں اور وی ایچ۔ای۔ سی سے منظور شدہ کن رسائل میں شائع ہوئے ہیں۔ ایک روز میں یہ معلومات فراہم کریں۔
۲۷ اکتوبر ۲۰۱۸ء                       ڈین آف فیکلٹی
________
رجسٹرار بنام پروفیسر
عزت مآب استاد جی!
انتظامیہ کے علم میں یہ بات آئی ہے کہ طلبہ و طالبات آپ کے معیارِ تدریس سے مطمئن نہیں ہیں۔ نیز اس سال آپ نے ایک بھی تحقیقی مقالہ تحریر نہیں کیا۔ آپ کو تنبیہہ کی جاتی ہے تدریسی اور تحقیق میں دل چسپی کا مظاہرہ کریں، بصورتِ دیگر آپ کے خلاف یک طرفہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
۳۱ اکتوبر۲۰۱۸ء                    رجسٹرار

Leave a Reply

2 تبصرے

  1. اعجازالحق اعجاز on

    ڈاکٹر وحیدالرحمن خاں صاحب کا شمار اردو کے بڑے مزاح نگاروں میں ہوتا ہے۔ انھوں نے زیر نظر خطوط میں پروفیسر حضرات کی حالت زار کو گہرے طنز و مزاح کے ذریعے آشکار کیا ہے کہ کس طرح انھیں ان کے اصل کام تدریس و تحقیق سے ہٹا کر سٹیریو ٹائپ سرگرمیوں میں الجھا کر ان کا وقت اور توانائی ضائع کی جاتی ہیں ۔ بہت عمدہ تحریر۔

  2. محمد عاصم چودھری on

    جامعات میں اساتذہ کے ساتھ ہونے والے سلوک کو انتہائی مؤثر انداز میں پیش کیا گیا ہے۔ تحریر طنز و مزاح کے ساتھ دل و دماغ پر اپنا اثر چھوڑنے کی بھرپور اہلیت رکھتی ہے۔

Leave A Reply

%d bloggers like this: