عاطف میاں کا فیصلہ: عوامی انقلاب کی نوید ۔۔۔ گل ساج

0
  • 238
    Shares

پیارے کپتان صاحب

” آپکو سات خون معاف ہیں”
گیس بجلی کی قیمتیں بڑھائیے، ٹیکس کے ذریعے گردن دبائیے عوام کو گھاس کھلائیے اسطرح ملک کو ترقی کی راہ پہ لائیے
سب گوارا ہے
مگر قادیانی سپورٹ نہیں
خدارا اپنے دوست دشمن کی پہچان کیجئے۔

قادیانی عاطف میاں والا کاری وار تھا جو آپکی نئی وزارت عظمیٰ پہ کیا گیا۔ آپکی صورتحال یوں ہو چلی تھی کہ

“پِنہاں تھا دامِ سخت قریب آشیان کے
اڑنے نہ پائے تھے کہ گرفتار ہم ہوئے”

ہم فقیر لوگ پہلی ساعتوں میں ہی بھانپ گئے تھے کہ یہ آپکے گرد وہ پھندا ڈالا گیا ہے جسمیں آپ کو پھنسانے کاپورا پورا انتظام کر لیا گیا ہے۔ اسکابیَن ثبوت تینوں مین سٹریم جماعتوں کا اس موقف پہ عاطف میاں کی حمایت کرنا آپکے مخالف دانشوروں قلم کاروں کا یِک زبان ہو کے آپکو اس فیصلے پہ ڈٹے رہنے کی ہلہ شیری دینا، بڑی مذہبی جماعتوں اور سیاسی شخصیات کا چُپ سادھ لینا ہے۔

یہ سب چاہتے تھے آپ دام میں پھنسیں اور ہم آپکے خلاف قادیانیت نواز ہونے کہ مہم برپا کریں یہ مہم شروع ہو بھی گئی تھی آپکو قادیانی قرار دینے کاپورا پلان بن چکا تھا مضمون لکھے جا رہے تھے ہنگامہ برپا کر دیا گیا تھا عاطف میاں کا تقرر اس تابوت میں آخری کیل ثابت ہوتا یہ رائے بنتی چلی جارہی تھی کہ “اگر عمران خان یہ تقرری واپس نہیں لیتا تو سمجھئیے کہ یہ فیصلہ کہیں اور سے ہوا ہے اور خان یقیناً قادیانی ایجنٹ ہے” یہ بڑا زہریلا پروپیگنڈہ تھا عوام بھی اس جھانسے میں پھنستی جارہی تھی آپکے سپورٹرز سخت کشمکش میں تھے۔

صد شکر آپ اس سازش سے عہدہ براء ہوئے۔ اللہ رب العزت نے کرم کیا اور ہم جیسے آپکے ادنیٰ سپورٹرز بھی سرخرو ہوئے۔

اس سارے سیناریو میں ایک بات سامنے آئی کہ یہ تحریک صرف اور صرف عام آدمی نے چلائی عام آدمی نے لِیڈ کی عام آدمی نے جیت لی۔

قادیانیت سے جڑا یہ واحد ایشو تھا جس پہ تمام سرکردہ مذہبی و سیاسی جماعتیں تقریباً خاموش رہیں۔ عشقِ رسول کے دعویدار شیخ رشید، عامر لیاقت اور دیگر بڑے راھنما بھی خاموشی سادھے رہے۔

پی ٹی آئی کے پہلی رَو میں شمار ہونے والے سوشل میڈیا ایکٹیوسٹس بھی عاطف میاں کی حمایت میں کمربستہ نظر آئے، دوسرے درجے کےسپورٹرز نے یہ جنگ لڑی۔

یہ بڑی خوش کُن بات ہے کہ پہلی بار عوام بِنا کسی قیادت بنا کسی سہارے کے بغیر جلوس دھرنوں کے اپنے بل بوتے پہ فتحیاب ہوئی۔

یہ عوامی انقلاب کی نوید ہے۔

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: