نوکری یا کاروبار: نوجوان نسل کا انتخاب (حصہ دوم) منشا طارق ورک

3
  • 37
    Shares

محنت کی عظمت کے بارے میں سبق تو طالب علم پہلی جماعت سے ہی سکھانا شروع کردیا جاتا ہے لیکن مسئلہ دراصل اس معاشرے کا ہے جہاں یہ باتیں صرف کتابوں میں ملتی ہیں۔ اصل سوال تو یہ ہے کہ طالب علموں کو محنت کے مشورے دینے والے خود عملاً کسی مزدور کی کتنی عزت کرتے ہیں؟ کسی پتھارے دار اور ٹھیلے والے کی توقیر ان کی نظر میں کیا ہے؟ اسی پر قیاس کرتے چلے جائیں تو ایسے لوگوں کے تضاد کے نمونے ملتے چلے جائیں گے اور ساتھ ساتھ اعلٰی تعلیم کے بعد اچھی اور باعزت ملازمت کے لیے دربدر ہونے والے نوجوانوں کے مسئلے کی وجہ بھی سامنے آجائے گی۔ یہ درست ہے کہ انسان محنت تو ملازمت میں بھی کرتا ہے لیکن یہ بھی جائزہ لینے کی کوشش کریں کہ اس محنت کا معاوضہ کس قدر آپ کو واپس ملتا ہے؟

اس تحریر کا مقصد یہ ہرگز نہیں کہ ملازمت کی سوچ کو ہی ترک کرکے صرف اپنے کاروبار کو ترجیح دی جائے۔ ملازمتوں میں افراد کی کھپت ہمیشہ محدود ہوتی ہے اس وجہ بڑی آبادی کے ملکوں میں جہاں ملازمتوں کے حوالے سے تعلیم یافتہ افراد کے مناسب مواقع کی عدم موجودگی جیسے مسائل کا سامنا ہوتا ہے جسے منفی پہلو کہہ سکتے ہیں، وہاں یہی زیادہ آبادی کاروباری نقطہء نظر سے انتہائی اہمیت اور مثبت پہلو ثابت ہوتی ہے.

کبھی کبھی بہت حیرانی ہوتی ہے ان نوجوانوں پر جو بزنس ایڈمنسٹریشن کی ڈگریاں حاصل کرنے کے بعد ملازمت کی غرض سے مارے مارے پھرتے ہیں.

اس تحریر میں ہم مختصراً کاروبار کی نوجوان نسل کی ذہنی تیاری، ترغیب اور حوصلہ افزائی کرنے کی کوشش کریں گے. کاروبار کرنے سے پہلے نوجوانوں کے سامنے جو بڑے سوالات ہوتے ہیں جیسے؛

* اپنا کاروبار کیسے شروع کریں؟
* کونسا کاروبار کریں؟
* کاروبار کا تجربہ کیسے حاصل کریں؟
* ہماری تعلیم و کاروبار کے درمیان کیسا تعلق ہو؟
* سرمایہ کیسے پیدا کریں؟
* اگر نقصان ہوگیا تو؟

بیروزگاری کے باوجود ہمارا نوجوان طبقہ کاروبار کا ایک بڑا رسک سمجھتے ہوئے اس میدان میں اپنی آزمائش کرنے سے گھبراتا ہے۔ ہم آسان الفاظ میں ان سوالوں کا جواب دینے کی کوشش کرتے ہیں، ضروری نہیں کہ کاروبار کرنے کے لئے آپ کے پاس لاکھوں، کروڑوں کی انویسٹمنٹ ہو، یہ بھی ضروری نہیں کہ آپ کے پاس بزنس اسٹڈیز کی ڈگریاں ہوں۔ اگر آپ کی تعلیم واجبی سی بھی ہے، تو بھی آپ اپنا کاروبار کر سکتے ہیں، اور اس کو کامیابی سے چلا سکتے ہیں۔

سب سے پہلی بات، ہر کاروبار ہر بندہ نہیں کرسکتا قدرت نے ہم سب کو کوئی نہ کوئی صلاحیت و قابلیت عطا کی ہوتی ہے ہم وہی کام بہت عمدہ کر سکتے ہیں، ہم اس کام کو کرنا انجوئے کرتے ہیں۔ جیسے ایک بندے  کمیونیکشن سکلز بہتر ہیں وہ بہت اچھا مارکیٹنگ پروفیشنل بن سکتا ہے۔ آپ نے اپنے ٹیلنٹ کو پہچاننا ہے اور اس ٹیلنٹ کو جاب یا کاروبار کی opportunity سے میچ کرنا ہے، آپ کی کامیابی کے بہت مواقع ہیں۔

“کسی نے کہا تھا جیسا تم سوچتے ہو تم ویسا ہی بن جاتے ہو،  ایسے تخلیقی کام  کیجیے جس سے کچھ نیا دریافت کرنے میں مدد ملے،اپنی صلاحتیں بڑھانے، دریافت کرنے کے  بہت سے طریقے ہیں ایک عمدہ طریقہ یہ ہے کہ اپنا اٹھنا بیٹھنا ان لوگوں کے ساتھ شروع کردیں جو آپ سے بہتر صلاحتیں رکھتے ہوں ،منفی مزاج کے لوگ آپ کو بھی اپنے ساتھ نیچے دھکیل سکتے ہیں اگر آپ ایسے لوگوں کو گائیڈ نہیں کر سکتے اور آپ کو محسوس ہوتا ہو کہ وہ آپ کو پستی کی جانب دھکیل دیں گے تو پھر ان سے اجتناب کیجیے۔ اپنے محتسب خود بن جائیے اور اپنے منفی رجعانات کو ذہن سے نکال دیجیے، ایسے لوگوں کو اپنا دوست بنائیے جو آپ سے زیادہ یا بہتر جانتے ہوں اور مثبت بھی ہوں وہ آپ کی صلاحتیں بڑھانے میں مدد گار ہونگے، ایسی مشہور زمانہ بین الااقوامی میعار کی کتابیں پڑھیئے جس سے آپ کی بصیرت میں اضافہ ہو۔

  1. کاروبار کی نوعیت عمومی طور پر دو طرح کی ہوتی ہے ایک میں آپ پراڈکٹس فروخت کرتے ہیں اور دوسری میں آپ کوئی خدمات (Services) پیش کرتے ہیں یا کرنے جا رہے ہیں، اس میں آپ یا تو کوئی پروڈکٹ بیچیں گے، یا آپ کو اس بات کا خیال رکھنا ہو گا کہ جو بھی پروڈکٹ یا سروس آپ بیچنے جا رہے ہو، کیا اس کی ڈیمانڈ ہے؟ ڈیمانڈ کا ہونا بہت ضروری ہے اور خریدار کا ہونا بہت ضروری ہے۔
  2. کاروبار کی کامیابی کے لئے نیک نیت اور ایمان داری بہت ضروری ہے۔ خریدار دراصل آپ کے لئے قدرت کی طرف سے وسیلہ رزق ہے اس وسیلے کے ساتھ آپ کا منفی برتاؤ آپ کا اپنے اوپر خود ہی رزق کا دروازہ بند کر لینے کے مترادف ہے جو اپنی تباہی ہے. کوشش خریدار کو بہترین پروڈکٹ یا سروس دیں گے جو اس کی ضرورت کے مطابق ہو. خریدار کا اعتماد حاصل کریں اور اسے قائم رکھیں وہ واپس آئے گا اور اپنے ساتھ مزید خریدار بھی لے کے آئے گا ایسے میں اگر آپ تھوڑی زیادہ قیمت بھی وصول کریں گے تو کوئی فرق نہیں پڑے گا ہاتھوں ہاتھ آپ کی پروڈکٹ خریدے گا۔ اسی طرح خدمات کی مثالیں بھی دی جا سکتی ہیں.
  3. بنیادی اصول آپ کی ایمانداری کام میں لگن اور محنت ہے۔ آج کے جدید ٹیکنالوجی کے زمانے میں آپ تعلیم یافتہ باشعور فرد ہیں تو یہ طے کرنا بالکل بھی مشکل نہیں کہ آپ کے پاس کونسا ہنر یا مہارت ہے اور آپ کس طرح سے اسے دوسروں کی خدمت کے لئے استعمال کر سکتے ہیں.
  4. کاروبار کرنے سے پہلے، اگر ہو سکے تو اسی میدان یا شعبہ میں جاب کریں۔ اس شعبے میں کچھ عرصہ جاب کرنے سے آپ بہت کچھ سیکھ لیں گے۔آپ کو کاروباری اونچ نیچ سمجھ آ جائیں گیں اور نقصان کا اندیشہ کم سے کم ہوگا. کاروبار کے لئے جو پراڈکٹ آپ منتخب کر رہے ہیں اس کے بارے میں مکمل معلومات رکھیں. ایک مناسب بزنس پلان بنائیں۔ کاغذ اٹھائیں اور اس پر تخمینہ لگائیں گے ابتدائی اخراجات، فروخت اور منافع کا حساب کتاب کریں، کتنا خرچہ ہونا ہے اور شروع میں میں کتنی سیل کر سکوں گا۔
  5. ایک اہم بات کہنا چاہوں گا کاروبار میں کبھی بھی حسابات نہ کیجئے ہمیں اعداد کا درست شمار کیجئے لین دین میں توازن رکھیے، کیلکولیشن اور اندراجات پر سمجھوتہ مت کیجئے. اگر آپ ان اصولوں کو مدنظر نہیں رکھ رہے تو آپ کا رویہ کاروبار کے ساتھ غیر سنجیدہ ہین اور جلد ہی آپ کاروبار سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔
  6. کاروبار شروع کرتے وقت یا چلتے ہوئے میں کبھی بھی مستقبل کے حوالے سے مناسب منصوبہ بندی کرتے رہیں، کاروبار وسیع ہونے پر زیادہ لوگوں کی خدمات حاصل کریں لیکن ضروری اختیارات اپنے ہاتھ میں رکھیں اور توقعات پر انحصار کم سے کم رکھیں بلکہ ہمیشہ بیک اپ تیار رکھیں.
  7. کاروبار کی ترقی کے لئے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کریں، جیسے انونٹری مینجمنٹ سسٹم، آن لائن سروسز، میڈیا کا استعمال تشہیر کے جدید طریقے وغیرہ. مزید مہارت حاصل کریں اور کاروباری شخصیت و سرگرمیوں سے رابطے میں رہیں.
  8. کاروبار میں بروقت اور دور اندیشی پر مبنی فیصلے آپ کو بہت بڑے بڑے jump دے سکتے ہیں اس لئے رسک بھی لینے پڑتے ہیں، کاروبار کو ہمیشہ کاروبار سمجھ کر کریں اسے مزدوری کی نظر سے نہ دیکھیں ورنہ کاروبار واقعی مزدوری بن کر رہ جاتا ہے اور آپ کی حیثیت ایک مزدور سے زیادہ نہیں رہتی اس بات سے قطع نظر کہ آپ کیا بیچتے ہیں اور کون آپ کے خریدار ہیں.
  9. انسان کی ظاہری وضع قطع اور رویہ بھی آپ کے کاروبار پر منفی اور مثبت طور پر اثر انداز ہوتا ہے. اس لئے آپ کا لباس اور رکھ رکھاؤ بہت متاثر کن نہ سہی لیکن جاذب نظر ضرور ہونا چاہیے، کہنے کا مطلب یہ نہیں کہ آپ بہت مہنگے ترین لباس استعمال کریں بلکہ آپ کے ظاہر سے آپکے سلیقہ مند ہونے کا تاثر پیدا ہو.
  10. آپ کا انداز گفتگو ایسا ہو کہ سننے والے آپ کے لئے بہت اہمیت کے حامل ہیں. کاروباری غرض سے ملنے والوں سے فلسفیانہ اختلاف والے موضوعات چھیڑنے سے گریز نہ صرف گریز کریں بلکہ باہمی دلچسپی اور کاروباری مفاد کے موضوعات پر بات کرنے کی کوشش کریں اس کے علاوہ باہمی گفتگو زیادہ مشینی انداز اپنانے سے بھی گریز کریں اور ہلکے پھلکے مزاح کو جگہ دی جاۓ۔
  11. کاروبار میں لگائے گئے سرمایہ سے اپنی نجی ضروریات کو پورا کرنے سے ہرممکن گریز کریں بلکہ اپنا فوکس جائز طریقے سے منافع بڑھانے کی جانب توجہ مبذول رکھیں.
  12. جس طرح ایک ملازمت پیشہ شخص کے لگے بندھے اوقات ہوتے ہیں جن کی وہ ہر ممکن پیروی کرتا ہے اسی طرح ایک کامیاب کاروباری شخص کو بھی اپنی روز مرہ زندگی کے کچھ اصول و ضوابط طے کرلینے چاہییں.
  13. کاروبار شروع کرنے سے پہلے دستیاب وسائل کا تجزیہ کرنا نہایت ضروری ہوتا ہے ہماری سب سے بڑی غلطی ہی یہی ہوتی ہے کہ ہم ہماری نظر کاروبار کے نام سے جڑے سرمائے اور سرمایہ پر ہوتی ہے ہم کبھی بھی حاصل وسائل پر انحصار کرتے ہوئے کاروبار کو شروع کرنے کی طرف متوجہ ہی نہیں ہوپاتے جب کہ ہم اپنے مطالعے میں یہ بھی پڑھ چکے ہوتے ہیں کہ بڑے بڑے سرمایہ کاروں نے اپنے کاروبار کا آغاز کیسے کیسے نامناسب اور مشکل حالات میں کیا.
  14. کاروبار کے حوالے سے ایک بڑا مغالطہ ہمارے اکثر ملازمت پیشہ افراد کے ذہنوں میں پایا جاتا ہے جس کی وجہ سے بھی وہ کاروبار کو اپنی جمع پونجی کے لئے خطرہ سمجھتے ہیں وہ ہے پارٹ ٹائم کاروبار کی مشہور terminology، اکثر دوست ملازمت پیشہ دوست سوال کرتے ہیں کہ ہمیں کوئی پارٹ ٹائم کاروبار بتایا جائے تاکہ ہم اپنی آمدنی میں اضافہ کرسکیں میرا ان دوستوں کو جواب ہوتا ہے کہ کاروبار کبھی بھی پارٹ ٹائم نہیں ہوا کرتا یہ فل ٹائم کام ہے. اگر آپ اپنی جمع پونجی ڈبونا چاہتے ہیں تو ضرور پارٹ ٹائم کاروبار میں سرمایہ کاری کیجئے.
  15. ایک اہم ترین بات جو کسی بھی کاروباری شخصیت کے لئے نہایت ضروری ہے جس سب سے زیادہ نظر انداز بھی کیا جاتا ہے. وہ آپ کی صحت اور آپ کے جڑے رشتے (Family)، اگر آپ اپنی کاروباری مصروفیات کی وجہ سے اپنے آپ کو اور اپنے خاندان کو وقت نہیں دے رہے تو سمجھ لیں کے آپ کامیاب کاروباری انسان نہیں بلکہ صرف پیسے بنانے والی ایک مشین ہیں. کاروبار یا دولت اپنی صحت اور خاندان کی قیمت پر نہیں ہونا چاہیئے. آپ کو اپنی ذات پر بھی سرمایہ کاری کرنی ہے اور خاندان کے حقوق بھی ادا کرنے ہیں جن کی خاطر بظاہر آپ کاروبار میں دن رات مگن ہیں. اپنی خوراک اور جسمانی صحت کا خیال رکھیں اور خاندان کو وقت دیں. ملازمت میں چھٹیوں کی طرح اپنے خاندان کے ساتھ وقت گزاریں.

سب سے آخری بات کاروبار کا سوچتے ہی ذہن میں خیال آتا ہے جیسا کاروبار کے لئے بہت بڑے سرمائے کی ضرورت ہے اس بات سے انکار نہیں کہ کاروبار میں سرمایہ اہمیت رکھتا ہے لیکن اس کے اہم ترین ضرورت ہے آپ کی منصوبہ بندی اور مناسب فیصلے ہیں. یہ مشاہدہ عام ہے کہ کسی نے بڑے سرمائے سے کاروبار شروع کیا ابتدائی ضرورت بہت اچھی طرح پوری کیں لیکن کاروبار آگے نہ بڑھ سکا اور سرمایہ بھی ضائع ہو گیا. ایسے حالات سے بچنے کے لئے بہت ضروری ہے.

آپ جو کاروبار کرنا چاہ رہے ہیں اس کے بارے میں زیادہ سے زیادہ معلومات حاصل کریں.

اگر ہوسکے تو جو لوگ پہلے سے اس کاروبار کو کررہے ہیں ان کی مجلس اختیار کریں.

کبھی بھی اپنا پورا سرمایہ کسی کاروبار شروعات میں ہی نہ جھونک دیں.

کاروبار میں بھیڑ چال کا حصہ مت بنیں اس سے مراد یہ ہے کہ تجزیہ کریں کہ کس کاروبار میں لوگوں کا رحجان کتنا ہے اور کیوں ہے؟ کیا یہ رحجان دیرپا ہوگا؟ بعض وقتی رحجانات کا حصہ بننا آپ کو بظاہر فائدہ تو دے جاتے ہیں لیکن آپ ایسے رحجانات پر مکمل انحصار نہیں کر سکتے خاص طور پر نئے کاروبار والوں کو اس سلسلے میں بہت محتاط رہنے کی ضرورت ہوتی ہے.

کاروبار میں ہمیشہ وہی لوگ کامیاب ہوتے ہیں جو اپنی تخلیقی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے نئے تجربات سے نئی پیداوار یا موجودہ پیداوار میں بہتری لاتے نئے رحجانات متعارف کراتے ہیں نہ کہ بھیڑ کا حصہ بن کر نقالی پر انحصار کرتے ہیں.

Be the trend setter, other should follow yours do not depend upon following.

 

 

Leave a Reply

3 تبصرے

  1. Be the trend setter, other should follow yours do .
    not depend upon following.
    عمدہ تجزیہ کیا .آخری لاہن خوب ہے.
    یقینا ہم ایک ایمرجنگ مارکیٹ کا حصہ ہیں .بہت سا روم آف امپرومنٹ باقی ہے .نئے اچھوتے آئڈیاز کی تو ہمیشہ ویکنسی پڑی ہوتی ہے .تخلیقی سوچ کچھ بھی نیا متعارف کراسکتی ہے جو معاشرے میں ٹرئنڈی بنے .خود کو زرا تخلیقی ٹریک پر منتقل کرکے تو دیکھیں نئے امکانات پیدا ہوتے نظر آئں گے .آنٹرپرنیورشپ کو پڑھیں .ممکن ہے کوئ بھی اچھوتا خیال جنم لے جو مارکیٹ میں نیا ٹرینڈ متعارف کرانے میں کامیاب ہو .ارد گرد نظر دوڑائں ممکن ہے کسی پرابلم کا سولوشن آپ بہتر طور پہ دے سکتے ہوں .چند ویب سائٹس کو وزٹ کریں ممکن ہے یہ سوچنے کےلیے محرک ثابت ہوں .
    Www .NIC.com.pk
    http://Www.plan9 .com.
    Startup bros .com .
    Tie.com .pk .
    Mystory.com.
    Techjuice.pk
    یہ پلیٹ فارم آ پکی سوچوں کو وسعت دیں گے .تخلیق کےلیے محرک ثابت ہو سکتے ہیں .tech based startups بڑی ریزی سے خود کو منوا رہے ہیں . نیو نیوز پہ آئڈیا کروڑوں کا شو اسی سلسلے کی کڑی ہے .RehanAllahwala اور آزاد چاے والا وغیرہ وغیرہ بہت انفارمیٹو یو ٹیوب چینلز ہیں .
    ایک لمحہ سوچیں ہم ای کمیونٹی بننے جارہے ہیں آپ بھی اپنا حصہ ڈالیے .میں تقریبا مایوس ہو چکا تھا لیکن مندرجہ بالا فورمز نے بہت مدد کی .الحمدللہ اب میں اپنا سٹارٹ اپ لانچ کرنیوالا ہوں .
    آخر میں سب کےلیے نیک تمنائں .

Leave A Reply

%d bloggers like this: