کچھ ان کہی: سلیم طاہر

1
  • 3
    Shares

کچھ نام ــــــــ اتنے محترم
کچھ چہرے ـــ اتننے معتبر
کچھ جذبے ـــ اتنے سچے ہوتے ہیں
کہ وہ ساتھ ہوں تو زندہ ہونے کا احساس ہوتا ہے ــ بے رخی برتیں تو زندہ رہنے کا جواز ڈھونڈنا پڑتا ہے ــ قدم قدم پر، احساس ِ محرومی دیوالیہ پن کا یقین دلاتا رہتا ہے
ان کے بغیر جینے کا ہنر آ جاۓ تو زندگی بے معنی، .بے مصرف اور بے رنگ دکھائی دیتی ہے ـ تحرک اور جمود اپنے لغوی معنی کھو دیتے ہیں. سیدھے راستے پر چلتے ہوئے بھی قدم لڑکھڑاتے رہتے ہیں ــ
اور
اگر
اچانک
وہ بچھڑے ہوۓ کسی راستے میں دوبارہ مل جایٰیں تو
بلا تکلف
اپنا
معطل شدہ خراج
طلب کرتے ہیں
اور
سود کے ساتھ
وصول کرتے ہیں
اور
اپنی، خود اختیاری گمشدگی کے
اشتہار کا
خرچہ بھی
آپ کےکھاتے میں ڈال دیتےہیں
اور
ساری زمہ داری
آپ کی
غفلت
لاپرواہی
کے
کاندھے پر ڈال دیتے ہیں
اور
آپ کی
بے بسی
اور
عاجزی
حقیقت جانتے ہوۓ
بھی
خاموش رہنے میں
عافیت سمجھتی ہے
ــ اور کوئی اندر سے پکار اٹھتا ہے
وہ، مرے منہ پہ جھوٹ، بولتا ہے
اس کی صورت کو دیکھتا ہوں میں

About Author

Leave a Reply

1 تبصرہ

Leave A Reply

%d bloggers like this: