عمیرہ احمد پہ اعتراضات کیوں: حجاب گل

0
  • 67
    Shares

دانش پہ کبیر علی نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ جدید دور کی لکھاری خواتین نے مذہب کو ناول میں استعمال کر کے مذہب کا مذاق اڑایا ہے ‘ انہیں چاہیے منٹو اور عصمت کی طرح کھل کر لکھیں۔۔۔

میں کسی حد تک ان کی تنقید سے متفق ہوں کہ نا صرف عمیرہ احمد کی تمام کہانیوں میں یکسانیت ہوتی ہے بلکہ نمرہ احمد ان کی کاپی کرتی نظر آتی ہیں بلکہ بعض اوقات گمان ہوتا ہے کہ ایک ہی قلم دونوں طرف چل رہا ہے۔۔۔۔۔۔

لیکن اگر ان صاحب کو اعتراض ننگے ادب کو کپڑے پہنانے پہ ہے تو اس سے میں متفق نہیں عصمت چغتائی جیسی سگریٹ اور شراب پینے والی خواتین ادب کے شاہکار تخلیق کرتی میں اس بات سے متفق نہیں۔۔۔

عمیرہ اور ان کی تقلید میں نمرہ صرف اس لیے ہٹ ہو گئ کہ نفسیاتی طور پر گھٹن کا شکار نوجوان نسل کو مذہب کے حسن نے سکون دیا اور میرا خیال ہے اس میں کوئی قباحت نہیں۔۔۔۔اگر لوگ مذہب کے پیراہن میں لپٹی کہانیاں  پسند کر رہے تو کسی کو کیا مسلہ ہے۔۔۔۔

اس دور میں کہ جب لڑکیوں کو چھوڑ لڑکوں کی بھی شادیاں ہو نہیں ہو رہی آپ عصمت چغتائ ‘ قرات العین وغیرہ کے لکھے ادب کو پڑھا کر معاشرے میں بے راہ روی بڑھا سکتے اور کچھ نہیں کر سکتے۔۔۔۔۔۔۔

اور دوسرا یہ کہ جو معاشرے میں ہو رہا وہی لکھا جاتا ہے ‘ تو آپ کے خیال میں معاشرے میں کیا صرف وہ ہوتا ہے جو منٹو نے لکھا یا جو عصمت چغتائی صاحبہ نے لکھا ؟؟؟

جی نہیں بہت سے گھرانوں میں لڑکیاں ابھی بھی شرم و حیا کا پیکر ہیں اور محبت ایک فطری جذبہ ہے کیا نماز پڑھنے والی لڑکی کو محبت نہیں ہو سکتی ؟؟؟

کیا کسی مرد کو نماز کے بعد اٹھے دعا کے ہاتھ ‘ اور وضو کے پانی سے دھلا ‘ گلابی دوپٹے میں لپٹا چہرہ دیکھ کر محبت نہیں ہو سکتی ؟؟؟؟

کیا مرد کو اسی عورت سے محبت ہوتی جو سلیو لیس اور ٹاپ لیس ہو ‘ کٹے بالوں کو شانوں پہ بکھرائے ہر نا محرم کو دعوت نظارہ دیتی ہو ؟؟؟؟

ایسی ہوس پرست محبت رکھنے والے مرد ہی بعد میں ساری زندگی سر پکڑ کے روتے ہیں کہ بالاخر انہیں بیوی چاہیے ہوتی ہے ‘ محبوبہ نہیں۔۔۔۔۔۔

تو اس میں کیا قباحت ہے کہ اس نسل کی محبت کو ” پاگیزگی ” کی چادر اوڑھا دی جائے۔۔۔۔۔محبت اور ہوس میں فرق دکھا دیا جائے۔۔۔

مجھے بتائیے حسن کی بجائے کردار کی محبت کو اجاگر کر کے معاشرے کو درست سمت میں لانے پہ آپ معترض کیوں ؟

امید ہے ان سوالات کے ممکنہ جواب اس موضوع کو آگے بڑہانے میں معاون ثابت ہوں گے۔

Leave a Reply

Leave A Reply

%d bloggers like this: